پاکستانی ٹیکسی ڈرائیور نے امریکہ میں کامیابی کے جھنڈے گاڑ دیئے ،ایسا فیصلہ کروا لیا کہ مسلمانوں کے دل جیت لیے

پاکستانی ٹیکسی ڈرائیور نے امریکہ میں کامیابی کے جھنڈے گاڑ دیئے ،ایسا فیصلہ ...
پاکستانی ٹیکسی ڈرائیور نے امریکہ میں کامیابی کے جھنڈے گاڑ دیئے ،ایسا فیصلہ کروا لیا کہ مسلمانوں کے دل جیت لیے

  


نیویارک (نیوز ڈیسک) امریکا میں سیکولر امریکیوں کے حقوق کا تو بہت خیال رکھا جاتا ہے لیکن غیر امریکیوں اور خصوصاً مسلمانوں کو حقوق سے محروم رکھنے کی ہر ممکن کوشش کی جاتی ہے۔ سینٹ لوئس سے تعلق رکھنے و الے راجہ نعیم کو بھی اس کے جائز مذہبی حقوق سے محروم رکھنے کی ہر ممکن کوشش کی گئی لیکن انہوں نے ہمت نہ ہاری اور بالآخر بھرپور قانونی جنگ کے بعد امریکی عدالت سے وہ فیصلہ کروالیا کہ جسے سن کر سب مسلمان عش عش کر اٹھے۔

پاکستانی نژاد راجہ نعیم کئی سال سے میٹر وپولیٹن ٹیکسی کیب کمیشن کے خلاف قانونی جنگ لڑرہے تھے تاکہ انہیں اپنے مذہب کی ہدایات کے مطابق لباس پہن کر کام کرنے کی اجازت دی جائے۔ کمیشن کی طرف سے ڈرائیوروں پر پابندی ہے کہ وہ کام کے دوران سیاہ پتلون اور بٹنوں والی شرٹ ضرور پہنیں لیکن راجہ نعیم کا موقف تھا کہ وہ کرتہ شلوار پہنیں گے جو کہ ان کے مذہب اور کلچر کے مطابق ہے اور ان کیلئے عبادت میں سہولت بھی اسی لباس میں ہے۔ کمیشن نے 2013ءمیں انہیں پیشکش کی تھی کہ وہ ایسا کرتہ پہن لیں جس کی لمبائی محض رانوں تک ہو، لیکن انہوں نے اسے قبول نہ کیا۔

اب ایک طویل قانونی جنگ کے بعد بالآخر عدالت نے راجہ نعیم کو ان کی مذہبی اور تہذیبی تعلیمات کے مطابق لباس کے انتخاب کی اجازت دے دی ہے۔ راجہ نعیم کی کامیابی کو امریکی مسلمانوں نے اپنی مجموعی کامیابی قرار دیا ہے اور عدالتی فیصلے پر خوشی کا اظہار کیا ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس