آل پارٹیز کانفرنس ،25جولائی یوم سیاہ ،عوامی رابطہ مہم شروع کرنے اور چیئرمین سینیٹ کو ہٹانے کا اعلان ، فیصلوں پر عمل در آمد کیلئے رہبر کمیٹی تشکیل

آل پارٹیز کانفرنس ،25جولائی یوم سیاہ ،عوامی رابطہ مہم شروع کرنے اور چیئرمین ...
آل پارٹیز کانفرنس ،25جولائی یوم سیاہ ،عوامی رابطہ مہم شروع کرنے اور چیئرمین سینیٹ کو ہٹانے کا اعلان ، فیصلوں پر عمل در آمد کیلئے رہبر کمیٹی تشکیل

  


اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) آل پارٹیز کانفرنس رہنماﺅں کا 25جولائی کویوم سیاہ ، عوامی رابطہ مہم شروع کرنے کا اعلان ، اے پی سی کے فیصلوں پر عمل در آمد کیلئے رہبر کمیٹی تشکیل دیدی گئی ،آئینی اور قانونی طریقہ سے چیئر مین سینیٹ کو ہٹانے کافیصلہ ، ادارے ملکی سیاست میں مداخلت ختم کریں، ججز کیخلاف ریفرنسز واپس لینے کا مطالبہ، قرضوں کیلئے بنایا گیا تحقیقاتی کمیشن مسترد کردیا۔

تفصیلات کے مطابق اے پی سی کے بعد اپوزیشن رہنماؤں کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان نے کہاہے کہ تمام پارٹیوں سے طویل مشاور ت اور گفتگو کے بعد جن امور پر اتفا ق ہے وہ میں قوم کے سامنے رکھ رہا ہوں ، اجلاس میں ملکی مسائل پر گفتگو ہوئی ہے ، یہ اجلاس 8گھنٹے تک جاری رہاہے ، اس میں متفقہ طور پر جو قراردادیں منظور کی گئی ہیں ، ان میں بجٹ کو عوام دشمن دقرار دیکر مستر کردیا گیا ہے ، اس بجٹ کے خلاف اپوزیشن پارلیمنٹ کے اندر اورباہر احتجاج جاری رکھے گی اورحکومت کو نا اہل حکومت سے نجات دلانے کی بھرپور کوشش کی جائیگی ، اس سے سلسلے میں تمام سیاسی جماعتیں عوامی رابطہ مہم شروع کریں گے تاکہ رائے عامہ کو منظم کیاجاسکے ، اجلاس میں مطالبہ کیا گیاہے کہ جنوبی وزیر ستان سے تعلق رکھنے والے دو ارکان قومی اسمبلی کے پروڈکشن آرڈر جارئی کئے جائیں ، ججوں کے خلاف سیاسی بنیادوں پر بنائے گئے ریفرنس عدلیہ پر حملہ ہیں، ان ریفرنسز کوفوری طور پر واپس لیا جائے ، اجلاس میں عدلیہ میں اصلاحات اورججوں کے تقرر کی طریقہ کار پر نظر ثانی پر زور دیاہے۔اجلاس میں مطالبہ کیاگیاہے کہ لاپتہ افراد کی بازیابی کے لئے قانون سازی کی جائے ، جولوگ سکیورٹی اداروں کی تحویل میں ہیں، ان کوعدالتوں کے سامنے لایا جائے ۔ انہوں نے کہا کہ اجلاس نے میڈیا پر نافذ سنسر شپ پر پابندی ختم کرنے ، اٹھارویں ترمیم کیخلاف پس پردہ کوششوں کی مذمت کی ہے اور ہر ایسی کوشش کی مذمت کی ہے جس کا مقصد پارلیمانی نظام حکومت کوکمزور کرناہے ، تمام افراد کا ایک ہی قانون اور ادارے کے تحت احتساب کیا جائے ، اداروں کوملکی سیاست میں ہرگز مداخلت نہیں کرنی چاہئے، اجلاس میں تحقیقاتی کمیشن کو نظام پرحملہ ، غیر آئینی اور غیر قانونی قراردیاہے ۔

انہوں نے کہاکہ الیکشن 2018میں دھاندلی کیخلاف بنائی گئی کمیٹی کے اپوزیشن ارکان نے اس کمیٹی سے فوری مستعفی ہونے کا فیصلہ کیاہے اور اس دھاندلی زدہ الیکشن کیخلاف 25جولائی کو یوم سیاہ منایا جائیگا ۔ اجلاس نے فیصلہ کیاہے کہ موجود چیئر مین سینیٹ کو آئینی اورقانونی طریقے سے ہٹایا جائیگا اورنیا چیئر مین سینیٹ متفقہ طور پر سامنے لایا جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ اجلاس نے آئین کی اسلامی دفعات کیخلاف اقدامات کے خلاف گہری تشویش کا اظہار کیاہے ۔ ایک کمیٹی تشکیل دیدی گئی ہے جو آئندہ حکمت عملی طے کرے گی اورچاروں صوبوں میں عوام کی آگاہی کیلئے ایک مشترکہ مہم شروع کی جائیگی ۔ یہ سب فیصلے مل کر ہونگے اور ہم عوام کے پاس جائیں گے ، اس مقصد کیلئے رہبر کمیٹی تشکیل دیدی گئی ہے ،رہبر کمیٹی اے پی سی کے فیصلوں پر عمل کریگی ، 25جولائی ہمارا ابتدائی ایونٹ ہوگا ، اس کے بعد ہم چاروں صوبوں میں مشترکہ جلسے کریں گے ۔ عوام کو نا اہل حکومت سے نجات دلانے کی کوشش کریں گے ۔

مزید : قومی /اہم خبریں