ایک مثالی استاد

ایک مثالی استاد

  

مہذب شخصیت، استاد، محقق،دانشور، شعبہ ابلاغیات کے ماہر پروفیسر ڈاکٹر مغیث الدین شیخ بھی دُنیا فانی چھوڑ کر اللہ کے حضور حاضر ہو گئے،ان کی وفات ایک اور عظیم انسان کی موت ہے، جس سے خلا اور بڑھ گیا۔ ڈاکٹر مغیث الدین شیخ کی رحلت کورونا وائرس کے باعث ہوئی،بتایا گیا ہے کہ چند روز قبل شکایت ہونے پر ان کو ڈاکٹرز ہسپتال داخل کرایا گیا، وہ زیر علاج تھے کہ طبیعت زیادہ خراب ہو گئی اور ان کو وینٹی لیٹر پر ڈال دیا گیا،لیکن فرشتہ ئ اجل نے مہلت نہ دی اور وہ دو روز قبل انتقال کر گئے۔پروفیسر ڈاکٹر مغیث الدین شیخ حافظ قرآن بھی تھے۔جامعہ پنجاب سے ایم اے کیا، پی ایچ ڈی کی ڈگری امریکہ سے حاصل کی، اور اپنی مادرِ علمی کے شعبہ ابلاغیات سے وابستہ رہے،شعبے کو انسٹیٹیوٹ آف کمیونی کیشن سٹڈیز بنا دیا، اور اس کے بانی ئ ڈائریکٹر مقرر ہوئے۔ریٹائر ہونے کے بعد نجی یونیورسٹیوں سے وابستہ رہے، اور اب بھی یو ایم ٹی (یونیورسٹی آف مینجمنٹ سائنسز) کے ڈین تھے۔ انہوں نے سینکڑوں ہونہار شاگرد چھوڑے ہیں۔ ان کی ایک بڑی تعداد ابلاع عامہ کے مختلف اداروں میں خدمات انجام دے رہی ہے۔ان کے متعدد شاگرد مختلف جامعات میں تدریس کا فریضہ بھی انجام دے رہے ہیں۔اپنے شاگردوں کی تعلیم و تربیت کے حوالے سے ان کا کردار مثالی تھا۔وہ ایک عہد ساز استاد تھے۔ان کی خدمات ہمیشہ یاد رکھی جائیں گی اور گلشن ِ صحافت ان کی یادوں سے معطر رہے گا۔

مزید :

رائے -اداریہ -