کروڑوں کے اثاثے بنانیوالے واپڈا ملازم کی ضمانت مسترد

کروڑوں کے اثاثے بنانیوالے واپڈا ملازم کی ضمانت مسترد

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہورہائی کورٹ کے مسٹر جسٹس سردار سرفراز احمد ڈوگر اور جسٹس صادق خرم پر مشتمل ڈویژن بنچ نے واپڈا میں بطور ہیلپر ملازمت شروع کرکے کروڑوں روپے کے اثاثے بنانے والے ملزم کی ضمانت کی درخواست مستردکردی، فاضل بنچ نے 10صفحات پر مشتمل تحریری فیصلہ بھی جاری کردیاہے،عدالتی فیصلے میں کہا گیاہے کہ 1981 ء میں بطور ہیلپر واپڈا میں ملازمت شروع کرکے کروڑوں روپے کے اثاثے بنانے والے ملزم کی درخواست ضمانت مستردکی جاتی ہے، ملزم حسین نے آمدنی سے زائد اثاثہ جات بنائے، نیب کی جانب سے ملزم کے اثاثوں کی مالیت 23 کروڑ 76 لاکھ 45 ہزار سے زائد بتائی گئی،ملازمت کے وقت ملزم حسین کے پاس صرف 11مرلے کی اراضی موجود تھی، حسین کی بیوی شریک ملزم نگہت کے پاس بھی شادی سے قبل کوئی جائیداد موجود نہیں تھی، واپڈا میں ملازمت کے بعد ملزم کے اثاثوں میں بہت تیزی سے اضافہ ہوا، ملزم واپڈا کے مینٹینینس اینڈ ٹیسٹنگ ڈیپارٹمنٹ اور ٹرانسفارمر سے متعلق شعبے میں تعینات رہا، ملزمان حسین اور نگہت کے نام پر 1071 کنال اراضی موجود ہے، حسین نے شریک ملزم نگہت کو طلاق دینے کا دعویٰ کیا تاہم طلاق نامہ مصدقہ نہیں،دونوں نے بیرون ملک ایک ہی فلائٹ میں سفر بھی کیا، ملتان میں پلاٹ خریدتے وقت دونوں نے اپنے آپ کو میاں بیوی ظاہر کیاجبکہ حسین کی شریک ملزم نگہت کی درخواست ضمانت مسترد ہو چکی ہے،اس لئے ملزم حسین کی ضمانت کی درخواست بھی مسترد کی جاتی ہے۔

ضمانت مسترد

مزید :

صفحہ آخر -