وزیراعظم اپنے وعدوں، اعلانات اور منشور کو یاد کرنے کیلئے قرنطینہ میں چلے جائیں: سراج الحق

    وزیراعظم اپنے وعدوں، اعلانات اور منشور کو یاد کرنے کیلئے قرنطینہ میں چلے ...

  

لاہور(نیوز ڈیسک)بانی جماعت اسلامی، مفکر قرآن مولانا سید ابوالاعلیٰ مودودی کے جانشین اور سابق امیر جماعت اسلامی پاکستان میاں طفیل محمد کے یوم وفات پر ان کی یاد میں منصورہ میں منعقدہ سیمینار میں مختلف شعبہ ہائے زندگی کی معروف شخصیات نے میاں طفیل محمد کی دینی و قومی خدمات کو سراہتے ہوئے کہاکہ میاں طفیل محمد نے ملک میں اسلامی نظام کے نفاذ اور حقیقی جمہوریت کے احیا کے لیے مثالی جدوجہد کی۔ ملک میں اسلامی انقلاب کا وہ عظیم دن جلد آنے والے ہے جس کے لیے سید مودودی، میاں طفیل محمد، قاضی حسین احمد، سید منورحسن اور ان کے ساتھیوں نے جدوجہد کی۔ سیمینار سے امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق، سیکرٹری جنرل امیر العظیم، مجیب الرحمن شامی، حافظ محمد ادریس، پروفیسر سلیم منصور خالد، میاں محسن طفیل اور سمیحہ طفیل نے خطاب کیا۔ اس موقع پر نائب امیر جماعت راشد نسیم، ڈپٹی سیکرٹری جنرل محمد اصغر، ذکر اللہ مجاہد اور سیکرٹری اطلاعات قیصر شریف بھی موجود تھے۔ سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ پاکستان اس وقت بہت ہی مشکل صورتحال سے دوچار ہے۔ وزیراعظم اپنے بائیس ماہ کے کاموں کی صفائیاں پیش کر رہے ہیں کہ میرے قول و فعل میں کوئی تضاد نہیں۔ وزیراعظم نے ایک بار پھر یوٹرن لیتے ہوئے کہاہے کہ میں نے آج تک کوئی یوٹرن نہیں لیا حالانکہ پہلے وہ کہتے تھے کہ بڑے لیڈر کی پہچان ہی یہی ہے کہ وہ یوٹرن لیتاہے۔سینیٹر سراج الحق نے کہاکھ اس وقت سمارٹ لاک ڈاؤن کی طرح ملک میں سمارٹ حکومت ہے۔ ملک کے کسی علاقے میں حکومت ہے اور کہیں حکومت نہیں ہے۔ کسی کچھ معلوم نہیں کہ حکومت کون چلاتاہے۔ پالیسیاں کہاں بنتی ہیں اور ان پر عملدرآمد کون کرواتاہے۔ سینیٹر سراج الحق نے حکومت کو مشورہ دیا کہ وہ دو ہفتے کے لیے خود کو آئسولیٹ کرتے ہوئے قرنطینہ میں چلی جائے اور وزیراعظم اپنے سابقہ وعدوں، اعلانات اور منشور کو یاد کریں، ہوسکتاہے ان کو کچھ یاد آجائے کہ انہوں نے قوم کے ساتھ کیا وعدے کیے تھے اور اب وہ کیا کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ حکمران ملک و قوم اور اللہ کیساتھ بے وفائی کر رہے ہیں اور مدینہ کی ریاست کا مذاق اڑا رہے ہیں۔ حکومت اپنے کسی ایک وعدہ پر عمل نہیں کر سکی۔ ملک میں مہنگائی، بے روزگاری، غربت اور بے چینی میں مسلسل اضافہ ہورہاہے۔ لوگ پریشان ہیں مگر حکمران اپنی موج میں مست ہیں۔ سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ دشمن ہماری سرحد پر بیٹھا ہے اور حکمران آپس میں دست و گریبان ہیں۔ ان حکمرانوں نے ایک دوسرے کی ٹانگیں کھینچنے، گریبان پھاڑنے اور ایک دوسرے کو نیچا دکھانے میں مہارت حاصل کر رکھی ہے۔ انہوں نے کہاکہ موجودہ حکومت سابقہ حکومتوں کا ہی تسلسل ہے۔

سراج الحق

مزید :

صفحہ آخر -