گندم کی قیمتوں میں اضافہ کے خلافقرارداد اسمبلی میں جمع

گندم کی قیمتوں میں اضافہ کے خلافقرارداد اسمبلی میں جمع

  

لاہور(لیڈی رپورٹر،نمائندہ خصوصی) پنجاب میں گندم 18سو سے 2ہزار روپے فی من فروخت کیخلاف پنجاب اسمبلی میں قرارداد جمع،قرارداد مسلم لیگ (ن) کی رکن سمیرا کومل کی جانب سے جمع کرائی گئی۔پنجاب میں گندم فی من 1800سے 2000روپے میں فروخت ہو رہی ہے۔حکومت نے پہلے گندم کا سرکاری ریٹ 14سو پھر 16سو مقرر کیا۔

بیس کلو آٹے کا تھیلہ بھی 1050میں فروخت ہو رہا ہے۔پنجاب حکومت اپنے مقرر کردہ ریٹس پر عملدرآمد کرانے میں ناکام نظر آرہے ہیں۔حکومت نے عام آدمی کو ناجائز منافع خوروں کے رحم و کرم پر چھوڑدیا ہے۔شہریوں کو ریلیف فراہم کرنا حکومت کی ترجیحات میں شامل نہیں رہا ہے۔حکومت کاشتکار کو بھی مقرر ریٹ فراہم نہیں کرپائی۔پنجاب کا کاشتکار ٹڈی دل اور شہری منافع خوروں کے حوالے کردیے گئے ہیں۔یہ ایوان حکومت سے مطالبہ کرتا ہے کہ گندم کے سرکاری ریٹس پر عملدرآمد یقینی بنایا جائے۔بیس کلو آٹے کے تھیلے کی فروخت 800روپے میں یقینی بنائی جائے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -