جتوئی:تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال کے عملے کا ایم ایس کیخلاف شدید احتجاج، نعرے بازی

  جتوئی:تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال کے عملے کا ایم ایس کیخلاف شدید احتجاج، نعرے ...

  

جتوئی (نامہ نگار) تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال جتوئی نااہل اور کرپٹ ایم ایس کی بھنیٹ چڑھ گیا۔۔ ڈاکٹرز اور پیرا میڈیکل سٹاف کا احتجاج چھٹے روز بھی جاری۔۔ مریض اور لواحقین شدید پریشان۔۔۔کرپٹ ایم(بقیہ نمبر42صفحہ6پر)

ایس کی تبدیلی تک ہمارا احتجاج جاری رہے گا۔۔ڈاکٹر اعجاز گبول سینئر وائس پریذیڈنٹ پی ایم اے تحصیل جتوئی تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال جتوئی کے ڈاکٹرز نے ایم ایس ڈاکٹر محمد اقبال بلوچ کا مریضوں لواحقین ڈاکٹرز اور پیرا میڈیکل سٹاف کے ساتھ انہتائی ہتک آمیز رویے کے خلاف بازروں پر کال پیٹاں باندھ کر احتجاج مظاہرہ کیا اس موقع پر پی ایم اے تحصیل جتوئی کے سینئر وائس پریذیڈنٹ آئی سرجن ڈاکٹر اعجاز گبول نے ایک پریس کانفرنس میں صحافیوں کو بتایا کہ تقریبا تین ماہ قبل ڈاکٹر محمد اقبال بلوچ کو ایم ایس ٹی ایچ کیو جتوئی کا ایڈیشنل چارج دیا گیا ڈاکٹر موصوف نے چارج سنبھالتے ہی ڈاکٹرز اور پیرا میڈیکل سٹاف مریضوں اور ان کے لواحقین کے ساتھ اپنا رویہ انہتائی ہتک آمیز اپنانا شروع کردیا جو کہ معزز پیشہ کے حامل افراد کیلئے انہتائی تکلیف دہ ہے اس موقع انہوں نے بتایا کہ مذکورہ ایم ایس کاراس سے پہلے کبھی بھی انتظامی عہرے کا تجریہ نہیں ہے اور نہ ہی انہوں کبھی اپنی ڈیوٹی کے فرائفں صحیح طرح سے ادا کئے۔ جبکہ وہ سرکاری اوقات میں چنی گوٹھ روڈ علی پور پراپنا ذاتی کلینک چلانے میں صرف کرتے ہیں۔ اسوقع پر انہوں نے وزیر اعلی پنجاب چیف سیکریٹری پنجاب سیکریٹری ھیلتھ کیپٹن عثمان کے علاوہ دیگر متعلقہ حکام سے کرپٹ اور نااہل ایم ایس کو تبدیل کرنے کی اپیل کی ہے اس موقع پر موجود ڈاکٹرز جن میں ڈاکٹر ساجد وقاص ڈاکٹر جام ذوالفقار ڈاکٹر محمد علیم بھابھہ ڈاکٹر سجاد احمد ڈاکٹر مشتاق احمد گدارا ڈاکٹر امجد شہزاد ڈاکٹر اختر سعید فاروقی ڈاکٹر جاوید اقبال ڈاکٹر ایاز گزارہ ڈاکٹر عاطف رضا کے علاوہ کثیر تعداد میں ڈاکٹرز اور پیرمیڈیکل سٹاف نے کہا کہ اگر مزکورہ ایم ایس کو فوری طور پر تبدیل نہ کیا گیا اور ان کے خلاف سنگین کرپشن کرنے پر تحقیقات نہ کی گئی تو ہم راست اقدام کرنے پر مجبور ہوجا ئنگے۔ اس سلسلے میں جب ایم ایس ڈاکٹر اقبال بلوچ سے استفسار کیا گیا تو انہوں ان تمام الزامات کی تردید کی۔

ایم ایس

مزید :

ملتان صفحہ آخر -