تیمرگرہ،آل ایمپلائز لوئر دیر کا بجٹوں کیخلاف احتجاجی مظاہرہ

تیمرگرہ،آل ایمپلائز لوئر دیر کا بجٹوں کیخلاف احتجاجی مظاہرہ

  

تیمرگرہ (بیورورپور ٹ) آل ایمپلائز لو ئر دیر نے مرکزی اور صوبائی بجٹ کو مسترد کر تے ہوئے اپنے مطالبات کے حق میں احتجاجی جلسہ کیا اور بلامبٹ سے تیمرگرہ شہید چوک تک ریلی نکالی قائدین نے ڈیڈ لائن دیتے ہوئے خبر دار کیا کہ اگر تین دنوں کے اندر اندر تنخواہوں میں اضافہ نہ کیا گیا اور ان کے تمام مطالبات تسلیم نہ کئے گئے تو پر صوبہ بھر کے ایمپلائز وزیر اعلیٰ ہاوس، پا رلیمنٹ ہاوس اور بنی گالہ کا گھیراو کرینگے اس حوالے ایجوکیشن کمپلکس بلامبٹ میں احتجاجی جلسہ اور بعد ازاں تیمرگر ہ پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظا ہرہ سے آل ٹیچرز ایسوسی ایشن کے صوبائی صدرسید محمد شاہ با چا، ایپکا لوئر دیر کے صدر محمد سلیم خان، سراج الدین،سکول آفیسرز ایسوسی ایشن صدر آفتاب عالم خان،خلیق الرحمان، پیرا میڈیکس کے صدر محمد رحیم، تنظیم اساتذہ کے صدر محب اللہ،، کلاس فور کے عبیدا لرحمان و دیگر نے خطاب کرتے ہوئے بجٹ میں سرکاری ملازمین کو یکسر نظر کرنے پر شدید احتجاج کیا اور وفاقی اور صوبائی بجٹ کو ائی ایم ایف کا بجٹ قرار دیتے ہوئے اسے مسترد کیا انھوں نے مطالبہ کیا کہ مہنگائی کی تناسب سے تنخو ہوں میں سوفیصد اضافہ کیا جائے، ہاوس رینٹ فکسڈ دیا جائے، میڈیکل الاونس میں اضافہ کیا جائے پے ریویژن کے اعلان کو عملی شکل دی جائے اور تمام صوبوں میں یکساں سکیل دیا جائے، سروس سٹریکچر میں پچاس فیصد اضافہ کیا جائے انھوں نے کہا کہ ائین پاکستان کے مطابق ہر دس سال بعد سروس پے سکیل میں اضافہ ہونا چاہئے لیکن ان کے پے سکیل میں اضافہ نہیں کیا گیا جو کہ سرکاری ملازمین کے ساتھ ظلم اور ناانصافی ہے انھوں نے کہا کہ صدر، وزیر اعظم، وزراء، اور ارکان سمبلی کے تنخوا ہوں میں چار سو فیصد اضافہ کیا گیا ہے جبکہ سرکاری ملا زمین کے لئے خزا نہ خالی ہونے کا رٹ لگایا جارہا ہے انھوں نے کہا کہ پشاور میں احتجاج کے دوران اجمل وزیر نے انہیں یقین دلا یا تھا کہ ان کے مطالبات جلد منظور کئے جائینگے لیکن کئی روز گزرنے کے باجود صوبائی حکومت نے ان کے ساتھ کوئی رابطہ نہیں کیا انھوں نے ڈیڈ لائن دیتے ہوئے خبر دار کیا کہ اگر تین چار روز میں ان کے مطالبات منظور نہیں کئے گئے تو صوبائی سطح پر سرکاری ملازمین کا اجلاس بلا کر ائندہ کا لائحہ عمل طے کیا جائیگا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -