جعلی لائسنس معاملہ ، پی آئی اے کا 150 پائلٹس کو گراونڈ کرنے کا اعلان ، لیکن پیچھے کیا کچھ چل رہا ہے ؟ نجی ٹی وی نے بڑا دعویٰ کر دیا

جعلی لائسنس معاملہ ، پی آئی اے کا 150 پائلٹس کو گراونڈ کرنے کا اعلان ، لیکن ...
جعلی لائسنس معاملہ ، پی آئی اے کا 150 پائلٹس کو گراونڈ کرنے کا اعلان ، لیکن پیچھے کیا کچھ چل رہا ہے ؟ نجی ٹی وی نے بڑا دعویٰ کر دیا

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن)نجی ٹی وی جیونیوز نے اپنی رپورٹ میں دعویٰ کیاہے کہ وفاقی وزیر ہوابازی غلام سرور خان نے 264 پائلٹس کے لائسنس جعلی قرار د ے دیئے ہیں جبکہ پی آئی اے انتظامیہ نے مبینہ طور پر 150 پائلٹس کو گراونڈ کرنے کا بھی اعلان کر دیاہے لیکن کسے گراونڈ کیا گیا یہ کسی کو نہیں پتا ہے اور اس حوالے سے ایسی کوئی فہرست ہی نہیں ہے ۔

نجی ٹی وی کا کہناتھا کہ سی ای او پی آئی اے ایئر مارشل ارشدملک نے سیکریٹری ایوی ایشن اور ڈائریکٹر جنرل سول ایوی ایشن اتھارٹی کو دو مرتبہ خط لکھا ہے جس میں کہا گیاہے کہ جعلی لائسنس کے حامل پائلٹس کی تفصیلات فراہم کی جائیں ،پی آئی اے ترجمان نے بتایا ہے کہ سول ایوی ایشن اتھارٹی کی جانب سے ابھی تک مشتبہ یا جعلی لائسنس کے حامل پائلٹس کی فہرست فراہم نہیں کی گئی ہے ۔

سی اے اے ذرائع نے بتایا ہے کہ ان کے پاس جعلی لائسنس کے حامل پائلٹس کی فہرست سرے سے ہی موجود نہیں ہے ،سی اے اے کے افسر کا کہناتھا کہ وہ نہیں جانتے کہ وفاقی زیر نے لائسنس جعلی ہونے کی بات کس بنیاد پر کی ہے اور انہیں معلوما ت کس کی جانب سے دی گئی گئیں ہیں ۔

نجی ٹی وی کا کہناتھا کہ ذرائع نے بتایاہے کہ سی اے اے نے پہلے ہی مشکوک ہونے پر 11 پائلٹس کے لائسنس ختم کر دیئے تھے لیکن سندھ ہائیکورٹ نے ان میں سے پانچ پائلٹس کے لائسنس درست قرار دیتے ہوئے بحال کر دیئے ہیں ۔نجی ٹی وی کا کہناتھا کہ صورتحال یہ ہے کہ پہلے پائلٹس پر الزام لگایا ہے ہے اور اب ثبوت تلا ش کیے جارہے ہیں ۔

سی اے اے ذرائع کا کہناتھا کہ اگر یہ الزام ثابت ہو جاتا ہے کہ سول ایوی ایشن اتھارٹی پائلٹس کو جعلی لائسنس جاری کرنے میں ملوث ہے تو نہ صرف عالمی سطح پر اس کی ساکھ متاثر ہو گی بلکہ انٹر نیشنل سول ایوی ایشن آرگنائزیشن کی جانب سے پابندیاں بھی عائد کی جا سکتی ہیں ۔

مزید :

قومی -