’لڑکیاں ریپ کے بعد سوتی تو نہیں‘ جج نے جنسی زیادتی کے ملزم کی درخواستِ ضمانت منظور کرلی

’لڑکیاں ریپ کے بعد سوتی تو نہیں‘ جج نے جنسی زیادتی کے ملزم کی درخواستِ ضمانت ...
’لڑکیاں ریپ کے بعد سوتی تو نہیں‘ جج نے جنسی زیادتی کے ملزم کی درخواستِ ضمانت منظور کرلی

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارتی ریاست کرناٹک کی ہائی کورٹ نے لڑکی کے ساتھ جنسی زیادتی کے ایک ملزم کی درخواست ضمانت منظور کر لی، کیونکہ لڑکی جنسی زیادتی کے بعد وہیں سو گئی تھی۔ انڈیا ٹائمز کے مطابق راکیش بی نامی ملزم پر الزام تھا کہ اس نے لڑکی کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا۔ عدالت میں متاثرہ لڑکی نے بتایا کہ جنسی زیادتی کے بعد وہ تھک گئی تھی، چنانچہ اسے نیند آ گئی اور وہ وہیں سو گئی۔

لڑکی کے اس بیان پر جسٹس کرشنا ایس ڈکشٹ کا کہنا تھا کہ ”ایسا کیسے ہو سکتا ہے کہ لڑکی کے ساتھ جنسی زیادتی ہو اور وہ وہیں سو جائے؟ متاثرہ فریق کا یہ بیان انتہائی نامعقول ہے ۔ ہمارے ملک کی خواتین جنسی زیادتی کے خلاف اس طرح کا ردعمل ظاہر نہیں کرتیں۔ “ رپورٹ کے مطابق اس لڑکی کے ساتھ مبینہ جنسی زیادتی ملزم نے اپنے دفتر میں رات 11بجے کی۔ لڑکی اس بات کی وضاحت بھی نہیں کر سکی تھی کہ وہ آدھی رات کو ملزم کے دفتر میں کیوں گئی اور پھر وہاں ملزم کے ساتھ بیٹھ کر شراب بھی پیتی رہی۔ میڈیا رپورٹس میں اس کیس کا ایک اور رخ بیان کیا جا رہا ہے کہ ملزم متاثرہ لڑکی کا ملازم تھا۔ مبینہ طور پراس نے شادی کا لالچ دے کر لڑکی کے ساتھ تعلق قائم کیا اور اس کے شادی سے مکرنے پر لڑکی نے جنسی زیادتی کا مقدمہ درج کروا دیا۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -بین الاقوامی -