رئیل سٹیٹ بروکرز،کارڈیلرز،ریسٹورنٹس اور سیلونز کو بھی ٹیکس نیٹ میں لانے کی تیاریاں

 رئیل سٹیٹ بروکرز،کارڈیلرز،ریسٹورنٹس اور سیلونز کو بھی ٹیکس نیٹ میں لانے کی ...
 رئیل سٹیٹ بروکرز،کارڈیلرز،ریسٹورنٹس اور سیلونز کو بھی ٹیکس نیٹ میں لانے کی تیاریاں

  

 اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک،نیوز ایجنسیاں) وفاقی وزیرخزانہ ومحصولات مفتاح اسماعیل نے کہاہے ٹیکس کی بنیاد اوردائرہ کارمیں توسیع زور زبردستی نہیں بلکہ مشاورت سے کی جائیگی۔  اپنے ایک بیان اور سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹرپراپنے ٹویٹ میں انہوں نے کہا نئے مالی سال کے وفاقی بجٹ میں لاکھوں دکانوں کوٹیکس نیٹ میں لایاگیاہے۔ جیولرز کو بھی ٹیکس کے دائرہ کارمیں لایاجارہاہے اورکسی کوشک نہیں ہونا چاہئے کہ آنیوالے مہینوں میں پروفیشنلز کو ٹیکس نیٹ میں لایاجائیگا۔وزیرخزانہ نے کہا چھوٹے دکانداروں اورجیولرز کوٹیکس کے دائرہ کارمیں لانے کیلئے  ان کی ایسوسی ایشنزسے بات چیت کی ہے اوران کی مرضی سے انہیں ٹیکس کے دائرہ کارمیں لایاگیاہے۔وزیرخزانہ نے کہا اب رئیل سٹیٹ بروکرز، بلڈرز، ہاؤسنگ سوسایٹیز ڈویلپرز، کارڈیلرز، ریستوران، سیلون وغیرہ کوٹیکس کے دائرہ کارمیں لایاجارہاہے۔ ٹیکس کی بنیاد اوردائرہ کارمیں توسیع زورزبردستی نہیں بلکہ مشاو ر ت سے کی جائیگی۔ ہم مرحلہ وار لاکھوں دکانوں کو ٹیکس نیٹ میں لا رہے ہیں۔

مزید :

قومی -بزنس -