رئیل اسٹیٹ سیکٹر، بلڈر اور ڈویلپرز نے سپر ٹیکس مسترد کر دیا 

   رئیل اسٹیٹ سیکٹر، بلڈر اور ڈویلپرز نے سپر ٹیکس مسترد کر دیا 
   رئیل اسٹیٹ سیکٹر، بلڈر اور ڈویلپرز نے سپر ٹیکس مسترد کر دیا 

  

لاہور (رپورٹ:میاں اشفاق انجم، تصاویر:ایوب بشیر) رئیل اسٹیٹ سیکٹر، بلڈر اور ڈویلپرز نے سپر ٹیکس مسترد کر دیا، پٹرول مصنوعات کی قیمتوں میں بے تحاشا اضافے اور اوورسیز پاکستانیوں کے لیے ریلیف پیکیج نہ آنے کی وجہ سے بیرون ممالک سے سرمایہ کاری رک چکی ہے، ڈالر کی اڑان کو روکنے میں حکومت ناکام رہی ہے،شٹام ڈیوٹی 2فیصد کرنے اور گین ٹیکس کی مدت 6سال کرنے کا فیصلہ واپس لیا جائے۔ رئیل سٹیٹ سیکٹر کے ٹیکس واپس نہ لئے گئے تو ملک گیر احتجاج کر سکتے ہیں۔ڈی ایچ اے اسٹیٹ ایجنٹس ایسوسی ایشن کے صدر میاں طلعت احمد، پیٹرن انچیف میاں عرفان، سینئر نائب صدر لطیف چودھری، آئی بی ایل کے چیئرمین میجر سعید راجپوت، شاہد اقبال، ملک نصیر احمد،نواز غنی،اظہر جی ایم اعوان کا سپر ٹیکس اور شٹام ڈیوٹی 1 فیصد سے بڑھا کر 2فیصد کرنے پر ردعمل۔میاں طلعت احمد نے وفاقی بجٹ میں کیپیٹل گین ٹیکس کی مدت 3 سال سے بڑھا کر6 سال کرنے سے منفی اثرات مرتب ہوں گے۔میاں عرفان نے کہا اوورسیز پاکستانی ووٹ کا حق واپس لینے سے ناراض ہیں۔ملک نصیر نے بیرون ممالک سے سرمایہ کاری کرنے والوں کے لئے خصوصی ریلیف پیکیج دینے کا مطالبہ کیا ہے۔سرفراز حسین نے کہا سپر ٹیکس سے صنعتیں بند ہو جائیں گی،حاجی لطیف، میجر سعید نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں بحال کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔نواز غنی نے بلڈنگ میٹریل کی قیمتوں میں اضافے کو مسترد کرتے ہوئے واپس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

مزید :

قومی -بزنس -