"سندھ کے بلدیاتی الیکشن میں سیاسی مخالفین کیلئے جمہوری عمل میں حصہ لینا جرم بنادیاگیا" جے یو آئی نے الیکشن کو غیر شفاف قرار دے دیا

"سندھ کے بلدیاتی الیکشن میں سیاسی مخالفین کیلئے جمہوری عمل میں حصہ لینا جرم ...

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) جمعیت علماء اسلام ف کے مرکزی ترجمان اسلم غوری کا کہنا ہے کہ سندھ کے بلدیاتی الیکشن میں سیاسی مخالفین کے لئے جمہوری عمل میں حصہ لینا جرم بنادیاگیا ،الیکشن کمیشن اپنی ذمہ داریاں پوری کرنے میں ناکام رہا، بلدیاتی الیکشن کا پہلا مرحلہ شفاف نہیں ہے۔

سندھ میں بلدیاتی الیکشن کے پہلے مرحلے کی پولنگ کے  حوالے سے اپنے ایک بیان میں اسلم غوری نے کہا کہ  سندھ میں بلدیاتی الیکشن کا پہلا مرحلہ ہنگاموں،کشت و خون اور دھاندلی کے واقعات سے بھرا پڑا ہے،  جمیعت علماء اسلام کے امیدواروں ،کارکنوں کو بدترین تشدد کا نشانہ بنایاگیا جب کہ  پولیس خاموش تماشائی بنی رہی۔بلدیاتی الیکشن کے دوران بدترین وڈیرہ شاہی کے دباؤ،دھمکیوں کے باوجود جےیوآئی کے کارکنان ثابت قدم رہے۔

انہوں نے کہا کہ صوبائی انتظامیہ نے بلدیاتی الیکشن میں جانبدارانہ کردار ادا کرکے بلدیاتی الیکشن پر سوالیہ نشان لگادیاہے، الیکشن کمیشن قبل ازالیکشن اور پولنگ ڈے پر دھاندلی اور پرتشدد کارروائیوں کو روکنے میں ناکام رہا،  صوبائی انتظامیہ کے غیر ذمہ دارانہ رویے اور جانبداری کی وجہ سے بلدیاتی الیکشن کا پہلا مرحلہ شفاف نہیں۔

جے یو آئی ترجمان نے سوال اٹھایا کہ کیا جمہوری سیاسی قوتوں نے اس طرز کے رویوں کے لئے جعلی عمران حکومت سے چھٹکارہ حاصل کیاتھا؟ صوبائی انتظامیہ اورالیکشن کمیشن کی وجہ سے بلدیاتی الیکشن میں بدترین صورتحال رہی،  سندھ کے بلدیاتی الیکشن میں سیاسی مخالفین کے لئے جمہوری عمل میں حصہ لینا جرم بنادیاگیا ، جیکب آباد، پنوعاقل، کندھکوٹ میں جے یو آئی کے پولنگ ایجنٹس کو اغوا  کیا گیا۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -