سپریم کورٹ نے عرفان قادر کا سپریم کورٹ کے بطور وکیل وکالت نامہ معطل کر دیا

سپریم کورٹ نے عرفان قادر کا سپریم کورٹ کے بطور وکیل وکالت نامہ معطل کر دیا
سپریم کورٹ نے عرفان قادر کا سپریم کورٹ کے بطور وکیل وکالت نامہ معطل کر دیا

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)سپریم کورٹ آف پاکستان نے عرفان قادر کا سپریم کورٹ بطور وکیل وکالت نامہ معطل کر دیا ۔سندھ حکومت کی جانب سے بکتر بند گاڑیوں کی خریداری سے متعلق کیس کی جس دوران عدالت نے گزشتہ روز بغیر وکالت نامے مقدے میں پیش ہونے پر وضاحت طلب کی جس پر عرفان قادر نے عدالت میں ناروا سلوک اور تلخ جملوں کا استعمال کیا جس کے باعث عدالت نے عرفان قادر کا سپریم کورٹ کے بطور وکیل وکالت نامہ معطل کر دیا۔ وکیل عرفان قادر کاکہناہے کہ عدالت کو میرے سندھ پولیس کے وکیل ہونے پر اعتراض ہے لیکن میں نے سندھ حکومت کا وکیل بن کر کوئی غلطی نہیں کی ۔

کیس سماعت کے دوران عدالت نے عرفان قادر کو فیس کی ادائیگی سے متعلق آئی جی سندھ سے جواب طلب کر لیا جس پر آئی جی سندھ نے کہاکہ عرفان قادر کو 30لاکھ میں سے 20لاکھ روپے فیس ادا کر دی گئی ہے جس پر عدالت نے سوال کیا کہ عرفان صدیقی کو کس کھاتے سے فیس کی ادائیگی کی گئی ہے ؟۔عدالت کے فاضل جج نے ریمارکس دیے کہ ایڈ وکیٹ جنرل کے ہوتے ہوئے الگ وکیل کرنے کی کیا ضرورت تھی اگر سندھ کے لاءافسران کیس نہیں لڑ سکتے تو گھر بھیج دیا جائے ۔

عرفان قادر نے کہاکہ انہیں جسٹس جواد پر یقین نہیں ہے اور انہیں بینچ سے الگ کیا جائے۔انہوںنے کہاکہ وزیراعلیٰ سندھ اور آئی جی پولیس کسی جج کے ماتحت نہیں ہیں جو ان سے جواب طلب کیا جائے ۔

مزید : اسلام آباد /اہم خبریں