60 سالہ یورپی بڑھیا نے مسلمان نوجوان سے شادی کرلی، دولہا کی عمر کتنی ہے؟ ایسی خبر کہ انٹرنیٹ پر ہنگامہ برپاہوگیا، لوگوں کو اپنی آنکھوں پر یقین نہ آئے

60 سالہ یورپی بڑھیا نے مسلمان نوجوان سے شادی کرلی، دولہا کی عمر کتنی ہے؟ ایسی ...
60 سالہ یورپی بڑھیا نے مسلمان نوجوان سے شادی کرلی، دولہا کی عمر کتنی ہے؟ ایسی خبر کہ انٹرنیٹ پر ہنگامہ برپاہوگیا، لوگوں کو اپنی آنکھوں پر یقین نہ آئے

  

پورٹ موریسبی (نیوز ڈیسک)ایک جانب یورپی سیاستدان پناہ گزینوں کو اپنے ممالک سے نکال باہر کرنے کے منصوبے بنارہے ہیں تو دوسری جانب یورپی خواتین اور پناہ گزین مردوں کے درمیان ایک کے بعد ایک عشقیہ کہانی سامنے آتی چلی جارہی ہے۔ تازہ ترین داستان پناہ گزینوں کے لئے کام کرنے والی ایک معمر خاتون ڈیان بامین نے رقم کی ہے، جس نے 31 سالہ پناہ گزین محسن نوروزی کے ساتھ شادی کر لی ہے۔ 

میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق ڈیان کی عمر 60 سال سے بھی زائد ہے لیکن اس کا کہنا ہے کہ محسن سے شادی صرف پیار کی خاطر کی ہے، اس کا کوئی اور مطلب نہ لیا جائے۔ دوسری جانب محسن کا بھی کہنا ہے کہ اس نے یورپی ویزے کی خاطر ڈیان سے شادی نہیں کی بلکہ انہیں واقعی سچی محبت ہوگئی تھی۔

’میں پاکستانی مردوں سے ملی تو مجھے احساس ہوا کہ یہ تو دراصل خود۔۔۔‘ پاکستان آئی فرانسیسی خاتون نے ایسی بات کہہ دی کہ سن کر تمام پاکستانی مَردوں کے منہ کھلے کے کھلے رہ جائیں

منوس آئی لینڈ میں زیر حراست محسن کا کہنا تھا ”میں تمام عمر اس کا خیال رکھوں گا۔ مجھے اس سے محبت ہے۔ کیا کسی کو اس پر اعتراض ہے؟“ اسے کرسمس آئی لینڈ سے پاپوا نیوگینی کے ایک جزیرے پر منتقل کیاگیا تھا، جہاں وہ گزشتہ چار سال سے مقیم ہے۔ محسن نے یہ نہیں بتایا کہ اس کا تعلق کس ملک سے ہے۔

دوسری جانب یہ بات بھی سامنے آئی ہے کہ جب آسٹریلوی حکومت نے متعدد پناہ گزینوں کو اپنے ملک میں واپس آنے کی اجازت دینے سے انکار کردیا تو انہوں نے پناہ گزینوں کی دیکھ بھال کے لئے کام کرنے والی خواتین سے شادی کرکے یورپی و مغربی ممالک میں داخل ہونے کی کوششیں کر دیں۔ محسن اور ڈیان کی شادی کو بھی ایک ایسی ہی کوشش قرار دیا جارہا ہے۔

ڈیان نے ان باتوں کی سخت مذمت کرتے ہوئے کہا ”میرا نہیں خیال کوئی بھی ویزے کے لئے شادی کرے گا۔ یہ مضحکہ خیز بات ہے۔ مجھے اس کی کوئی فکر نہیں کہ لوگ کیا سوچتے ہیں۔ مجھے اور محسن کو معلوم ہے کہ ہم کیا چاہتے ہیں۔ ہمیں کسی کی فکر نہیں۔“

مزید :

ڈیلی بائیٹس -