قومی ہاکی ٹیم کی نیوزی لینڈ کیخلاف ٹیسٹ سیریز میں شاندار فتح

قومی ہاکی ٹیم کی نیوزی لینڈ کیخلاف ٹیسٹ سیریز میں شاندار فتح

  

شائقین ہاکی کے لئے خوشخبری۔قومی ہاکی ٹیم نے طویل عرصہ کے بعد عمدہ کھیل سے شائقین کے دل جیت لئے، نیوزی لینڈ کے خلاف کھیلی گئی ہاکی ٹیسٹ سیریز میں جس طرح سے پوری ٹیم اور خاص طو ر پر کپتان عبدالحسیم خان نے شاندار کھیل کا مظاہرہ کیا اس سے کھلاڑیوں کی محنت اور کھیل سے لگن سامنے آگئی۔ کیوی ٹیم کا شمار دنیا کی ہاکی ٹیموں میں کیا جاتا ہے اور جس طرح سے ٹیم نے کیوی سر زمین پر میزبان ٹیم کے خلاف عمدہ کھیل پیش کرکے سیریز2-1 سے اپنے نام کی اس کی مثال ماضی میں بہت کم ملتی ہے اس وقت جب قومی ہاکی ٹیم شدید مشکلات کا شکار ہے ایسے موقع پر یہ کامیابی بہت خوش آئند ہے اور اس کے مستقبل میں بہت اچھے نتائج برآمد ہوں گے اس سریز میں کامیابی کے بعد اب قومی ہاکی ٹیم نے آسٹریلیا کے خلاف ہاکی سیریز میں شرکت کرنی ہے اور اس کے لئے یہ کامیابی بہت اہمیت کی حامل ہے امید ہے کہ جس طرح سے ٹیم نے اس ایونٹ میں کامیابی حاصل کی ہے اسی طرح محنت و جوش و جذبہ سے وہ آسٹریلیا کے خلاف بھی اس کی سرزمین پر کامیابی حاصل کرنے میں کامیاب ہوسکتی ہے ۔ پاکستان کی اس جیت پر شائقین ہاکی کے ساتھ ساتھ پوری قوم بہت خوش ہے اور امید کررہی ہے کہ مستقبل میں بھی ٹیم اسی طرح سے عمدہ کھیل کا مظاہرہ کرنے میں کامیاب ہوں گی کپتان عبدالحسیم خان کا اس جیت پر کہنا ہے کہ پوری ٹیم نے بہت محنت سے کھیل پیش کیا اور اس محنت کا صلہ ہی ہے کہ ہم نے کامیابی حاصل کی ہے اور اس سے تمام کھلاڑیوں کے حوصلے بہت بلند ہوئے ہیں اور ہمیں اب آسٹریلیا کے خلاف کھیلی جانے والی سیریز میں بھی اس کا بہت فائدہ ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ ایسے وقت میں جب ہاکی ٹیم مسلسل ناکامی کا شکار تھی کامیابی خوش آئند ہے دورہ آسٹریلیا میں قومی ہاکی ٹیم نے میزبان ٹیم کے خلاف چار ہاکی میچ کھیلنے ہیں اس سیریز کا پہلا میچ 28 مارچ کو کھیلا جائے گا جبکہ دوسرا اگلے روز29 مارچ تیسرا31 مارچ اور اس کے بعد چوتھا اور آخری میچ یکم اپریل کو کھیلا جائے گا اور اس وقت قومی ہاکی ٹیم اس سیریز کی تیاریوں میں مصروف ہے اور اگر قومی ٹیم نے آسٹریلیا کے خلاف اس سیریز میں کامیابی حاصل کرلی تو یقینی طور پر پاکستان ہاکی ٹیم اور پاکستان کے لئے یہ بہت بڑی فتح ہو گی۔ پاکستان ہاکی ٹیم کی خاص بات یہ ہے کہ جب وہ حریف ٹیم کے خلاف جیت کا جذبہ لیکر میدان میں اترتی ہے تو کامیابی اس کے قدم چومتی ہے اور اس مرتبہ بھی شائقین ہاکی کو اس بات کا یقین ہے کہ پاکستان کی ٹیم اس سیریز میں ایسا ہی کھیل پیش کرے گی جیسا کہ اس نے نیوزی لینڈ کے خلاف پیش کیا ہے اور امید ہے کہ پاکستان ٹائٹل اپنے نام کرنے میں کامیاب ہوجائے گی اس وقت قومی ہاکی ٹیم کو زیادہ سے زیادہ فتوحات کی اشد ضرورت ہے اور اسی طرح سے پاکستان کی ہاکی ٹیم اس کھیل میں اپنا کھویا ہوا مقام حاصل کرنے میں کامیاب ہو گی اور اس کے لئے ٹیم کے تمام کھلاڑیوں کو اپنی اپنی ذمہ اری کو احسن طریقہ سے سر انجام دینے کی ضرورت ہے اس حوالے سے قومی ہاکی ٹیم کے منیجر حنیف خان نے کہا کہ یہ بہت خوش آئند بات ہے کہ پاکستان کی ہاکی ٹیم نے نیوزی لینڈ میں عمدہ کھیل پیش کیا ہے او ر جس طرح سے پاکستانی کھلاڑیوں نے پیش کیا ہے وہ قابل خوشی ہے اور اس سے نوجوان کھلاڑیوں کو بہت سیکھنے کا ملا ہے اور جس طرح سے کوچز نے اپنے فرائض سر انجام دئیے ہیں وہ بھی قابل تعریف ہے اور اسی وجہ سے کھلاڑی بھی بہت اچھا کھیل پیش کررہے ہیں او رمستقبل میں بھی کھلاڑی ایسے ہی اچھا کھیل پیش کرنے کی کوشش کریں گے اور دورہ نیوزی لینڈ میں پوری ٹیم نے ہی بہت اچھا کھیل پیش کیا ہے اور اسی طرح اب محنت کو جاری رکھنے کی ضرورت ہے اور اسی طرح سے پاکستان اس کھیل میں ترقی کرے گا جو وقت کی ضرورت ہے۔ قومی ہاکی ٹیم کے ہیڈ کو چ جنید خان نے اس کامیابی پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ یہ ہماری فتوحات کا آغاز ہے اور اسی طرح سے ہم مستقبل میں عمدہ کھیل کا مظاہرہ کریں گے اور قومی ہاکی ٹیم نے جس طرح سے عمدہ کھیل کا مظاہرہ کیا ہے اس کی جتنی بھی تعریف کی جائے کم ہے او ر یہ ان کی محنت کا نتیجہ ہے اور اسی طرح سے ہم اب آسٹریلیا کے خلاف بھی عمدہ کھیل پیش کرنے کے لئے تیار ہیں اور پاکستان ہاکی ٹیم اس طرح سے مزید ترقی کرے گی اور پاکستان ہاکی ٹیم کے لئے نیوزی لینڈ کے خلاف کامیابی بہت اہم ثابت ہوگی نوجوان کھلاڑیوں کے ساتھ جس طرح سے ہم نے سنیئرز کھلاڑیوں کا کمبی نیشن بنایا ہے اس کا نتیجہ بہت اچھا نکلا ہے اور اب ہمارا اگلا ٹارگٹ آسٹریلوی ہاکی ٹیم کے خلاف اس کی سر زمین پر عمدہ کھیل پیش کرکے اس کے خلاف کامیابی حاصل کرنا ہے ۔

مزید :

ایڈیشن 1 -