جہیز اور مہنگائی ، ہزاروں بچیوں کے ہاتھ پیلے نہ ہو سکے

جہیز اور مہنگائی ، ہزاروں بچیوں کے ہاتھ پیلے نہ ہو سکے

  

لاہور (عامر بٹ سے) بے روزگاری ،مسلسل بڑھتی ہوئی مہنگائی اور سسرالیوں کی جانب سے جہیز کی لالچ میں نت نئی فرمائشیں،غریب طبقہ کے لئے اپنی بیٹیوں کے ہاتھ پیلے کرنا ایک بھیانک خواب بن گیا ،جہیز میں استعمال ہونے والی اشیاء کی قیمتیں آسمان سے باتیں کرنے لگیں جبکہ کیٹرنگ کا سامان بھی غریبوں کی پہنچ سے دور ہو گیا ،اپنی بیٹیوں کی شادیاں کرنے کے لئے شہری قسطوں پر جہیز کی اشیاء بمعہ سود خریدنے پر مجبور ہونے لگے ،سینکڑوں خواتین والدین کی جانب سے جہیز کا سامان نہ دینے کے باعث باعث سسرال میں سر جھکا کر زندگی گزارنے پر مجبور تفصیلات کے مطابق بڑھتی ہوئی مہنگائی کے باعث آج جہاں ضروریات زندگی میں استعمال ہونے والی اشیاء کی قیمتیں تین گنا زیادہ مہنگی ہو چکی ہیں وہاں اس مہنگائی کے جن نے غریب عوام کی کمربھی توڑ کر رکھ دی ہے اور اسی صورتحال کی وجہ سے شہریوں کی ایک قابل ذکرتعداد انتہائی پریشان اور شدید ذہنی کوفت میں بھی مبتلا ہے جس کی ایک بڑی وجہ ان کی بیٹیوں کے لئے تیار کئے جانے والا جہیز کا سامان بھی ہے معلوم ہوا ہے کہ آج فرنیچر سے لے کر زیورات تک ہر چیز غریبوں کی دسترس سے باہر ہو چکی ہے یہی وجہ ہے کہ آج صوبائی دارالحکومت میں ایک سروے رپورٹ سے معلوم ہوا کہ جہیز سامان کی تیاری نہ ہونے کے باعث 60ہزار سے زائد خواتین کی شادیاں نہیں ہو پائیں،فرنیچر، بوتیک سوٹ، لہنگا، زیورات اور دیگر جیولری کی قیمتیں بھی بہت بڑھ چکی ہیں ،شہری قسطوں پر جہیز پر سامان کی خریداری کر کے سود کے چکر میں پھنس کررہ جاتے ہیں۔ شہریوں کی بڑی تعداد نے خادم اعلیٰ پنجاب میاں محمد شہباز شریف سے اپیل کی ہے کہ جس طرح انہوں نے عوامی فلاح کے بیشتر منصوبوں کی تکمیل کی ہے اور بیشتر پر کام ہو رہا ہے اسی طرح غریب شہریوں کی بیٹیوں کی شادی بیاہ کے لئے بھی خصوصی پیکج تیار کرتے ہوئے غریب شہریوں کے سروں پر بھی شفقت کا ہاتھ رکھیں تا کہ ان کی بیٹیوں کے رشتے ہو سکیں اور وہ سکھ چین سے اپنی زندگی گزار سکیں ۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -