ہائیکورٹ کے متعددغیر سنجیدہ افسران کی سالانہ خفیہ رپورٹس نامکمل

ہائیکورٹ کے متعددغیر سنجیدہ افسران کی سالانہ خفیہ رپورٹس نامکمل

  

لاہور(نامہ نگار)لاہور ہائیکورٹ کے درجنوں افسروں کے غیرسنجیدہ رویے کی وجہ سے ان کی 2016ء کی سالانہ خفیہ رپورٹس نامکمل ہونے سے افسروں کی ترقیوں کے کیسوں پر عملدرآمدالتوا کا شکار ہو کر رہ گیا ہے۔ لاہور ہائیکورٹ کے بیشتر افسروں نے 2016ء کی سالانہ خفیہ رپورٹس مکمل نہیں کی ہیں، عدالت عالیہ کے سینئر افسروں کی غیرسنجیدگی کا نوٹس لیتے ہوئے تمام افسرں اور ملازمین کو مراسلہ تنبیہ جاری کر دیا گیا ہے، ڈپٹی رجسٹرار ایچ آر محمد عارف ملک کی طرف سے جاری مراسلے میں کہا گیا ہے کہ ہائیکورٹ کے افسروں کی اکثریت نے 2016ء کی سالانہ خفیہ رپورٹس نہیں لکھیں۔ بروقت خفیہ رپورٹس نہ لکھنے سے افسروں کی ترقیاں تاخیر کا شکار ہوتی ہیں بلکہ لاہور ہائیکورٹ کے ججز پر مشتمل ڈیپارٹمنٹل پروموشن کمیٹی کو بھی مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے، مراسلے میں کہا گیا ہے کہ آئندہ افسروں کی ترقی کا فیصلہ خفیہ رپورٹس میں دستیاب معلومات پر ہی ہوگا۔

، سالانہ خفیہ رپورٹس نامکمل ہونے پر افسروں کے ترقی کے کیسز مؤخر کر دیئے جائیں گے ، مراسلے میں تمام افسروں اور ملازمین کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ ایک ہفتے میں نامکمل خفیہ رپورٹس کو مکمل کریں اور جن کی رپورٹ سرے سے ہی نہیں لکھی گئیں، وہ افسران بھی اپنی رپورٹس جلد مکمل کریں۔

رپورٹس نامکمل

مزید :

علاقائی -