مجھے حاجیوں کیساتھ بھلائی کرنے کی سزا ملی ،حامد سعید کاظمی

مجھے حاجیوں کیساتھ بھلائی کرنے کی سزا ملی ،حامد سعید کاظمی

  

اسلام آباد(اے این این)سابق وفاقی وزیر مذہبی امور حامد سعید کاظمی نے کہا ہے کہ مجھے عوام کی عدالت سے انصاف اور حاجیوں کیساتھ بھلائی کرنے کی سزا ملی ہے،میرے ساتھ لی گئی عوام کی تصاویر کو میرے خلاف ثبوت بنا کر پیش کردیا گیا، کیس کو جتنا کھریدا جائے اتنی ہی میری بے گناہی ثابت ہوگی، اڈیالہ جیل میں مجھے سی کلاس میں قید رکھا گیا جہاں پر قتل اور چوری کے ملزمان موجود تھے جبکہ پہننے کیلئے جیل کے کپڑے دئیے گئے ، مجھے جب بھی کوئی ملنے آتا تو میں کپڑے تبدیل کر لیتا تھا ۔ نجی ٹی وی کو دیئے گئے انٹرویو میں حامد سعید کاظمی نے کہا کہ اعظم سواتی میرے خلاف کیس میں گواہ نہیں ہے اورجب سے کیس کی سماعت چل رہی ہے ابھی تک کسی نے زبانی کلا می گواہی کیساتھ ساتھ میرے خلاف ثبوت کیساتھ بھی بات نہیں کی،لیکن افسوس کہ میرے خلاف ثبوت اور گواہی منظرعام پر نہ آنے کے باوجود مجھے سزا سنا دی گئی۔حامد سعید کاظمی نے کہا کہ مجھ پرالزام لگانے والا پاکستانی سفیر تھا ،میرے خلاف چیف جسٹس کو جو خط بھیجا گیا اوراس خط کے اوپر سے میرا نام ہٹا کر چیف جسٹس کا نام لکھا گیاتھاجبکہ خط میں شکایت کی گئی کہ کچھ لوگ صحیح کام نہیں کررہے ان کیخلاف اپنی نگرانی میں کمیٹی قائم کریں،حالانکہ میں رہائشی عمارتوں میں کسی بھی جگہ سے ملوث نہیں ہوں ۔میں انتظامات دیکھنے کیلئے جاتا تھا لیکن یہ خیال کیاجاتا تھا کہ میں عمارتوں کی آڑ میں کاروبار کرنے کیلئے آتا ہوں ۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ میرے سگے بھائی نے میرے اکاونٹ میں اپنی تنخواہ کے پیسے بھیجے جو ان کی فیملی کیلئے تھے اور بات یہ پھیلا دی گئی کہ میں نے کرپشن کے پیسے چھپا رکھے ہیں جبکہ احمد فیض اشتہاری ہے جب تک اسے گرفتارنہیں کیا جائے گا یہ معاملہ ختم نہیں ہوگا۔میں جب کسی جگہ کاجائزہ لینے جاتا ہوں حجاج کیلئے توظاہر سی بات ہے اس وقت میرے ساتھ وزارت حج کے لوگ بھی موجود ہوں تو انہیں لوگوں میں احمد فیض بھی موجود تھا۔میں وہاں کسی کو شاپنگ یا زیارات کیلئے لے کر نہیں کیا گیاتھا بلکہ سعودی حکام کی جانب سے انتظامات کے جائزہ کیلئے دی جانیوالی دعوت پر گیا تھا ۔جب ہم باہر نکلتے ہیں تو بہت سے لوگ ہمارے ساتھ تصاویر بنواتے ہیں اور اسی دوران میرے خلاف ایسے لوگوں کی تصویروں کو ثبوت بنا کر پیش کیا گیا جس کے نتیجے میں مجھے سزا ہوگئی۔آخر میں حامد سعید کا کہنا تھا کہ سردار لطیف کھوسہ بہت قابل وکیل ہیں انہوں نے میرے رہائی کیلئے بہت کوششیں کی اور ان کی کوششوں کی وجہ سے مجھے رہائی ملی ہے۔سیاست میں رہنے کا فیصلہ بہت مشکل ہے ،فیملی کی جانب سے بھی سیاست کو خیر باد کہنے کیلئے زور ڈالا جارہا ہے۔

حامد سعید کاظمی

مزید :

صفحہ آخر -