مقبوضہ کشمیر کی آبادی کے تناسب میں تبدیلی کیخلاف اقوام متحدہ سے روابط کرینگے: مسعود خان

مقبوضہ کشمیر کی آبادی کے تناسب میں تبدیلی کیخلاف اقوام متحدہ سے روابط ...

  

اسلام آباد (اے این این) صدر آزاد جموں وکشمیر سردار محمد مسعود خان نے کہا ہے کہ بھارت کی ہندو انتہاء پسند حکومت مقبوضہ کشمیر میں مسلم آبادی کا تناسب تبدیل کرنے کیلئے ایک حکمت عملی کے تحت اقدامات کر رہی ہے ۔ کشمیری وکلاء کو اندھیرے میں رکھ کر ایڈووکیٹ ایکٹ کا خاموشی سے نفاذ اسی سلسلے کی کڑی ہے تاہم مقبوضہ کشمیر میں آبادی کے تناسب میں تبدیلی کے خلاف اقوام متحدہ اور عالمی برادری سے رابطہ کرنا ہو گا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے کشمیر ی دانشور اور حریت رہنما شیخ تجمل الالسلام اور عبدالحمید لون سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ صدر سردار مسعود خان نے کہا کہ بھارت مقبوضہ کشمیر میں طاقت کی جنگ لڑ رہا ہے۔ جس میں قوانین ، انسانی حقوق اور عالمی اصولوں کی پامال کیا جا رہا ہے لہٰذا کشمیری دانشور صحافی اور صاحب علم حضرات مسئلہ کشمیر کے قانونی ، انسانی اور اخلاقی پہلوؤں کو اجاگر کریں۔انہوں نے کہا کہ کشمیریوں کا مقدمہ قانونی طور پر مضبوط ہے لیکن ہمیں مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے منظم اندازمیں کام کرنا ہو گا۔ صدر سردار مسعود خان نے کہا کہ 70سال سے کشمیریوں نے جمہوری و سیاسی جدو جہد کی ہے۔ تشدد اور گولی کا استعمال بھارت کر رہا ہے۔حالانکہ بھارتی قابض افواج کو بھی سمجھ لینا چاہیے کہ تشدد مسئلے کا حل نہیں ۔ بھارت فوری طور پر مذاکرات اور سفارتکاری کو بحال کرے پاکستان اور آزاد کشمیر کے عوام باہمی دوطرفہ اور سہ فریقی مذاکرات کیلئے ہمہ وقت تیار رہیں ۔ مسئلہ کشمیر کے حل میں تاخیر پورے خطے پاکستان اور بھارت کی ترقی میں بھی بڑی رکاوٹ ہو گی ۔ دریں اثناء صدر آزاد کشمیر سردار محمد مسعود خان سے کشمیر سالیڈریٹی کونسل نارتھ امریکا کے چیئرمین جاوید راٹھور نے بھی ملاقات کی اور عالمی سطح پر مسئلہ کشمیر کے حوالے سے کی جانے والی کوششوں اور دیگر امور پر تبادلہ خیال کیا ۔

مزید :

صفحہ آخر -