صوبائی حکومت کی طرف سے جاری کردہ انصاف صحت کارڈ میں گھپلوں کا انکشاف

صوبائی حکومت کی طرف سے جاری کردہ انصاف صحت کارڈ میں گھپلوں کا انکشاف

  

نوشہرہ(بیورورپورٹ) صوبائی حکومت کی طرف سے جاری کردہ انصاف صحت کارڈ میں گھپلوں کاانکشاف زمان ہسپتال نوشہرہ میں علاج کی سہولت دینے سے پہلے ڈاکٹر نے پانچ ہزار روپے کا مطالبہ کیا جس سے غریب مریض سخت مشکلات سے دوچار غریبوں کو سہولت دینے کی بجائے ان سے رقم کا تقاضا کہاں کاانصاف ہے اگر غریبوں کے پاس علاج کیلئے پیسے ہوتے تو ان کو مفت علاج کرنے کی کیاضرورت تھی صوبائی حکومت نے عوام کو صحت کی سہولت کی فراہمی کے جو بڑے بڑے دعوے کئے تھے ان پر ڈاکٹروں نے پانی پھیردیا ہے وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پرویز خان خٹک اور صوبائی وزیر صحت شہرام ترکئی فوری طورپر مذکورہ ڈاکٹر کے خلاف کاروائی کرے بصورت دیگر زمان ہسپتال کا گھیراؤ کرکے ڈاکٹروں کے خلاف بھرپور احتجاج کریں گے ان خیالات کااظہار ممبر ضلع کونسل و تحریک انصاف کے رہنما قاری ظہور اللہ نے نوشہرہ میں اخبار نویسوں سے بات چیت کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت نے صحت انصاف کارڈ عوام کی سہولت کیلئے جاری کیاتھا لیکن ان میں بھی ڈاکٹروں گھپلے شروع کردئیے ہیں اور صحت کارڈ کو غلط راستے پر ڈال دیا ہے اور نوشہرہ میں صوبائی حکومت کی ہدایت پر زمان ہسپتال میں صحت کارڈ سے مریضوں کو علاج کی سہولت کی فراہمی کیلئے جو ادارہ قائم کیا ہے ان میں غریب مریضوں کو دونوں ہاتھوں سے لوٹاجارہا ہے اوران سے پانچ ہزار روپے علاج سے پہلے طلب کئے جاتے ہیں غریب مریضوں نے انصاف صحت کارڈ کی سہولت میسر ہونے پر سکھ کا سانس لیا تھا لیکن موجودہ صوبائی حکومت کی اس منصوبے کو ناکام بنانے کیلئے زمان ہسپتال میں ڈاکٹر اور دیگر عملہ غریب مریضوں سے پانچ ہزارروپے کا تقاضا کرکے غریب مریضوں کو مشکلات میں ڈال رہے ہیں۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -