وسیم اکرم کو شک کا فائدہ دیا، انضمام کے خلاف ثبوت نہیں ملے، سلیم ملک اور عطا الرحمان کو ٹھوس شواہد کی بنا پر فکسنگ کا ذمہ دار قرار دیا:جسٹس (ر) ملک عبدالقیوم

وسیم اکرم کو شک کا فائدہ دیا، انضمام کے خلاف ثبوت نہیں ملے، سلیم ملک اور عطا ...
وسیم اکرم کو شک کا فائدہ دیا، انضمام کے خلاف ثبوت نہیں ملے، سلیم ملک اور عطا الرحمان کو ٹھوس شواہد کی بنا پر فکسنگ کا ذمہ دار قرار دیا:جسٹس (ر) ملک عبدالقیوم

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) جسٹس (ر) ملک عبدالقیوم نے کہا ہے کہ کرکٹ میں فکسنگ سکینڈل کی تحقیقات کے دوران وسیم اکرم کو شک کا فائدہ دیا جبکہ انضمام کے خلاف فکسنگ کے ثبوت نہیں ملے، سلیم ملک اور عطا الرحمان کے خلاف پکے ثبوت تھے اس لیے انہیں ذمہ دار قرار دیا۔

نجی ٹی وی ”سما “ کو انٹرویو کے دوران جسٹس (ر) عبدالقیوم کا کہنا تھا کہ سلیم ملک اور عطا الرحمان کے خلاف پکے ثبوت تھے اس لیے انہیں فکسنگ کا ذمہ دار قرار دیا ۔ عطا الرحمان کی بات پر بھروسہ نہیں تھا ، اس نے کمیشن کے سامنے جھوٹ بولے اور بار بار بیانات بدلتا رہا ۔

انہوں نے کہا کہ انضمام الحق بڑا کھلاڑی تھا لیکن اس کے خلاف فکسنگ کا کوئی ثبوت نہیں ملا، وسیم اکرم کا بڑا نام تھا اس لیے ہلکا ہاتھ رکھا ، اس کے خلاف کارروائی کیلئے پکے ثبوت درکار تھے لیکن ثبوت نہیں ملے جس کی وجہ سے اسے شک کا فائدہ دے کر چھوڑنا پڑا۔

جسٹس (ر) عبدالقیوم کا کہنا تھا کہ آفیشلز کے بغیر فکسنگ ہو ہی نہیں سکتی، میچ فکسنگ پکڑی جانی آسان جبکہ سپاٹ فکسنگ پکڑنا بہت مشکل ہے اس لیے کھلاڑیوں پر کڑی نگرانی رکھنے کی ضرورت ہے۔

واضح رہے کہ 1996 میں میچ فکسنگ کا سکینڈل سامنے آنے پر جسٹس (ر) عبدالقیوم کی سربراہی میں کمیشن قائم کیا گیا تھا جس نے اس سکینڈل کی تحقیقات کی تھیں ۔ اس کمیشن کی تجاویز کی روشنی میں سلیم ملک اور عطا الرحمان کو میچ فکسنگ کا ذمہ دار قرار دے کر ان پر تاحیات پابندی عائد کی گئی تھی۔

مزید :

کھیل -اہم خبریں -