اس دن وہ فوجی ہمارے گھر میں داخل ہو گئے تو میں نے ان کی منتیں کیں کہ میرا ریپ کر دیں کیونکہ۔۔۔۔ نوجوان لڑکی کی ایسی داستان کہ سن کر آپ کی آنکھوں میں بھی آنسو آجائیں

اس دن وہ فوجی ہمارے گھر میں داخل ہو گئے تو میں نے ان کی منتیں کیں کہ میرا ریپ ...
اس دن وہ فوجی ہمارے گھر میں داخل ہو گئے تو میں نے ان کی منتیں کیں کہ میرا ریپ کر دیں کیونکہ۔۔۔۔ نوجوان لڑکی کی ایسی داستان کہ سن کر آپ کی آنکھوں میں بھی آنسو آجائیں

  

جوبہ(مانیٹرنگ ڈیسک) جنوبی سوڈان کی خانہ جنگی دنیا کے بہت بڑے انسانی بحران کو جنم دے چکی ہے، جس میں باقی بحرانوں کی طرح سب سے بڑا نشانہ خواتین ہی بنیں۔ کئی سالوں پر محیط اس افراتفری میں سوڈانی فوج ہی کے ہاتھوں لاکھوں خواتین کی عصمت دری ہو چکی ہے۔ ڈیلی سٹار نے اپنی رپورٹ میں فوجیوں کی اس بربریت کا شکار ہونے والی ایک لڑکی کی ہولناک داستان شائع کی ہے جسے سن کر کسی بھی شخص کی آنکھیں بھر آئیں۔ رپورٹ کے مطابق اس 26سالہ لڑکی نے اخبار کو بتایا کہ ”ایک روز ہمارے گھر میں دو فوجی گھس آئے اور انہوں نے میری 9سالہ بیٹی اور میری ماں پر حملہ کر دیا اور ان سے جنسی زیادتی کی کوشش کی۔ میں ان کی منتیں کرنے لگی کہ ان کی بجائے تم مجھ سے زیادتی کر لو۔ اس پر انہوں نے باقی تمام گھروالوں کو ایک کمرے میں بند کر دیا اور مجھے دوسرے کمرے میں لیجا کر زیادتی کا نشانہ بناتے رہے۔“

بڑے کھلاڑی کو بچانے کیلئے قربانی کا بکرا بنایا گیا، فکسنگ کی ہوتی تو قرض لے کر گھر نہ بنانا پڑتا: عطا الرحمان

رپورٹ کے مطابق لڑکی کا کہنا تھا کہ ”میں نے کنٹری کمشنر کو اس واقعے کی رپورٹ بھی کی تھی لیکن کوئی ایک ملزم بھی گرفتار نہیں ہو سکا۔ میں آج بھی انتہائی خوف کی حالت میں زندگی گزار رہی ہوں کہ ایسا واقعہ پھر بھی میرے ساتھ رونما ہو سکتا ہے۔“ جنوبی سوڈانی حکام کا کہنا ہے کہ وہ جنسی تشدد کے خلاف اقدامات اٹھا رہے ہیں لیکن حقیقت یہ ہے کہ اب بھی سینکڑوں کی تعداد میں خواتین کو جنسی زیادتی کا شکار بنائے جانے کی رپورٹس منظرعام پر آ رہی ہیں۔جنوبی سوڈان کے وزیر تعلیم ابوکاتو کینی کا کہنا ہے کہ ”موندری شہر میں حالات زیادہ خراب ہیں لیکن وہاں بھی آہستہ آہستہ بہتری آ رہی ہے۔حکومت نے ایک نیا قانون لاگو کیا ہے جس کے تحت ضابطے کی خلاف ورزی کرنے والے فوجیوں کو بھی سزا دی جائے گی۔“

مزید :

ڈیلی بائیٹس -