مردان ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن نے ڈٖسٹرکٹ ہیلتھ اتھارٹی کے قیام کے فیصلے کو مسترد کر دیا

مردان ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن نے ڈٖسٹرکٹ ہیلتھ اتھارٹی کے قیام کے فیصلے کو ...

مردان ( بیورورپورٹ) ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن نے ڈسٹرکٹ ہیلتھ اتھارٹی کے قیام کے فیصلے کو مسترد کرتے ہوئے اس کے خلاف طبل جنگ بجادیاہے اورکہاہے کہ رات کی تاریکی میں بند لفافوں میں بننے والی پالیسی کسی طور پر قبول نہیں کی جائے گی مردان پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے ینگ ڈاکٹر زایسوسی ایشن کے صدر ڈاکٹر ضیاء الرحمان ،چیئرمین ڈاکٹر محمدعلی شاہ ،نائب صدر ڈاکٹر امین ،جنرل سیکرٹری ڈاکٹر شکیل احمد اور ایم ایم سی کے فوکل پرسن ڈاکٹر آیازعلی شاہ نے بتایاکہ حکومت ایم ٹی آئی کے بعد ڈی ایچ کیو ہسپتالوں کی حیثیت ختم کرکے کارپوریٹ اداروں میں تبدیل کیاجارہاہے حکومتی فیصلے سے ملازمین میں بے چینی پھیل گئی ہے انہوں نے کہاکہ ڈی ایچ اے کے قیام میں کسی سے مشاورت نہیں کی گئی ہے اورتمام سٹک ہولڈز کو نظر انداز کیاگیاہے ڈسٹرکٹ ہیلتھ اتھارٹی کے لئے رات کی تاریکی میں ایک منظور نظر شخص کے ذریعے قوانین بنائے جارہے ہیں جو ڈاکٹروں برادری کو کسی صورت میں منظور نہیں وائی ڈی اے کے عہدیداروں نے کہاکہ حکومت اداروں کو سیاست سے پاک کرنے کی عوے تو کررہی ہے لیکن نئی ڈسٹرکٹ ہیلتھ اتھارٹی کے لئے چھ ممبران میں چار سیاسی افراد ہوں گے جو اپنی مرضی سے فیصلے مسلط کریں گے انہوں نے کہاکہ ڈی ایچ اے میں نہ ہیلتھ ڈیپارٹمنٹ کی رائے لی گئی ہے اورنہ ہی ہماری صوبائی تنظیم سے رابطہ کیاگیاہے انہوں نے کہاکہ حکومت سرکاری ہسپتالوں کو کارپوریٹ بناکر اان اداروں کو منافع بخش بنانے اور غریبوں کے مفت علاج کی سہولت کو ختم کیاجارہاہے جسے کسی طورپر قبول نہیں کیاجائے گا اور آخری وقت تک اس کے خلاف بھرپور مزاحمت کی جائے گی ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر