قوم کے نوجوان شیل ایکو میراتھن 2019 میں شرکت کیلئے تیار

قوم کے نوجوان شیل ایکو میراتھن 2019 میں شرکت کیلئے تیار

کراچی (پ ر) شیل پاکستان نے یوم پاکستان ملک کے متاثر کن نوجوانوں کے ساتھ منایا۔ یہ نوجوان شیل ایکو میراتھن ایشیا 2019 میں شرکت کریں گے۔ شیل ایکو میراتھن ایشیا توانائی کے حوالے سے ایک سالانہ ایونٹ ہے جس کی میزبانی بھی شیل کرتا ہے۔ اس ایونٹ میں دنیا بھرسے نوجوان طلباء ، توانائی کے استعمال میں عمدہ کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والی، اپنی ڈیزائن اور تیار کردہ ایسی گاڑیوں کے ہمراہ شرکت کرتے ہیں۔اس سال، پاکستان کی 7یونیورسٹیوں سے تعلق رکھنے والی 9 ٹیمیں حصہ لیں گی جبکہ ایشیا اور مشرق وسطیٰ کے ممالک سے تعلق رکھنے والی کم و بیش 100 طلباء ٹیمیں حصہ لیں گی۔یہ ٹیمیں توانائی کے استعمال میں کفایت کرنے والی اپنی کاریں ٹیسٹ کریں گی اور دیکھیں گی یہ کاریں کم سے کم توانائی استعمال کر کے کتنی دور تک سفر کر سکتی ہیں۔جنوبی پاکستان سے جو تین ٹیمیں اس ایونٹ میں حصہ لیں گی ان میں نیشنل یونیورسٹی آف سائنسز اینڈ ٹیکنالوجی 150پاکستان نیوی انجنیئرنگ کالج(NUST PNEC) کی ٹیمیں انویژن پی این ای سی۔ نسٹ(Envision PNEC NUST) اربن اور انویژن پی این ای سی نسٹ پروٹو ٹائپ(Envision PNEC NUST Prototype)جبکہ ڈی ایچ اے صفہ یونیورسٹی (DSU) کی ٹیم ڈی ایس ایو(Team DSU) حصہ لیں گی۔ اس موقع پر نسٹ پی این ای سی (NUST PNEC)کی ٹیموں نے اپنی تخلیق کا مظاہرہ بھی کیاجس میں مہمانوں نے گہری دلچسپی ظاہر کی۔ ٹیم لیڈ سعد چنائے نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا:’’ہماری یونیورسٹی شیل ایکو میراتھن میں، اس کے آغاز سے ہی، شرکت کرتی آئی ہے۔اس سال ہم نے نہایت تندہی سے دو اقسام کی گاڑیوں پر کام کیا ہے؛ اربن (Urban)اور پروٹو ٹائپ(Prototype) ۔ہم نے مائلیج(mileage) بہتر بنانے کے لیے گاڑی کے ٹائروں سے پیدا ہونے والی کارآمد توانائی استعمال کی ہے۔ہم نے فری وہیل میکانزم(fee-wheel mechanism) استعمال کیا ہے تاکہ ایندھن میں بچت ہو اور رگڑ سے ہونے والے نقصانات میں بھی کمی ہو۔ہم بین الاقوامی مقابلے میں شرکت کے لیے تیار ہیں۔‘‘نمائش کا افتتاح کرتے ہوئے شیل پاکستان کے ایکسٹرنل ریلیشنز منیجر، حبیب حیدر نے کہا:’’پاکستان سے تعلق رکھنے والی ٹیمیں ، سنہ 2010ء سے،شیل ایکو میراتھن ایشیا میں حصہ لے رہی ہیں۔آبادی کے لحاظ سے پاکستان دنیا کا چھٹا بڑ ا ملک ہے جہاں توانائی کی طلب میں اضافہ ہو رہا ہے، لہٰذا ، توانائی کااستعمال بہتر بنانے کے لیے کام کرنا ہمارے لیے بہت اہم ہے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر