سندھ سے مبینہ اغوا لڑکیاں اسلام آبادہائیکورٹ پہنچ گئیں

سندھ سے مبینہ اغوا لڑکیاں اسلام آبادہائیکورٹ پہنچ گئیں
سندھ سے مبینہ اغوا لڑکیاں اسلام آبادہائیکورٹ پہنچ گئیں

  


اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) سندھ کے علاقے گھوٹکی سے مبینہ طور پر اغوا ہونے والی لڑکیاں اسلام آباد ہائی کورٹ پہنچ گئی ہیں۔

دونوں لڑکیوں کی طرف سے دائر تحفظ فراہمی کی درخواست پر آج سماعت ہوگی۔ چیف جسٹس اسلام آباد ہائی کورٹ جسٹس اطہرمن اللہ سماعت کریں گے۔

ہندو مذہب تبدیل کرنے والی بہنوں آسیہ عرف روینہ ، شازیہ عرف رینہ کا تعلق گھوٹکی سے ہے اور اپنے شوہروں کے ساتھ عدالت سے پہنچی ہیں۔درخواست میں وزارت داخلہ ، وزیراعلی سندھ مراد علی شاہ ، آئی جی پولیس پنجاب فریق ہیں۔

درخواست گزار نے آئی جی سندھ ،آئی جی اسلام آباد، پیمرا، ارکان قومی اسمبلی رمیش کمار اور ہری لال کو بھی فریق بنایا ہے۔درخواست میں مو¿قف اپنایا گیا ہے کہ دونوں بہنوں نے زبردستی نہیں بلکہ اپنی مرضی سے اسلام قبول کیا، تحفظ فراہم کیا جائے۔

سندھ کے ضلع ڈہرکی سے مبینہ طورپر اغوا ہونے والی لڑکیوں نے اسلام قبول کرنے کے بعد پسند کی شادی کا وڈیو بیان دیا تھا۔

مسلمان ہونے والی روینا کا نام آسیہ بی بی رینا کا شازیہ رکھا گیا ہے۔ روینا کا نکاح صفدر جبکہ رینا کا برکت سے ہوا ہے۔ وزیراعظم پاکستان نے بھی لڑکیوں کے مبینہ اغوا کا نوٹس لیتے ہوئے فوری تحقیقات کی ہدایت کر رکھی ہے۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد