نواز شریف نے اب باہر جانے کی ضد کی تو کیا ہو گا؟ حامد میر نے بتا دیا

نواز شریف نے اب باہر جانے کی ضد کی تو کیا ہو گا؟ حامد میر نے بتا دیا
نواز شریف نے اب باہر جانے کی ضد کی تو کیا ہو گا؟ حامد میر نے بتا دیا

  


اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) سینئر صحافی و تجزیہ کار حامد میر نے کہا ہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف کو ریلیف ملنے پر لوگ یہ بھی کہیں گے کہ اس کا کریڈٹ پیپلز پارٹی کو جاتا ہے جنہوں نے حکومت پر دباﺅ ڈالا اور اب اگر نواز شریف نے باہر جانے کی ضد کی تو اس سے ان کی اور پارٹی کی ساکھ کو شدید نقصان پہنچے گا۔

تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے حامد میر نے کہا کہ کوئی مانے یا نہ مانے مگر نواز شریف کو ریلیف ملنے پر بھی باتیں ہوں گے اور لوگ کہیں گے کہ اس کا کریڈٹ بلاول بھٹو اور پیپلز پارٹی کو جاتا ہے جس نے حکومت پر دباﺅ ڈالا ہوا تھا کہ نواز شریف کو کچھ ہوا تو قتل کا مقدمہ عمران خان پر درج کروائیں گے۔

نواز شریف ایک سیاستدان ہیں اور ان کے حوالے سے آنے والے سپریم کورٹ کے فیصلے کے اثرات پاکستان کی سیاست پر بھی مرتب ہوں گے اور اگر وہ باہر جانے کی ضد کرتے ہیں اور دوبارہ مسلم لیگ (ن) کہتی ہے کہ ان کا نام ای سی ایل سے نکال دیا جائے تو پاکستان میں ایک بہت بڑا سکینڈل بن جائے گا۔

کہا جائے گا کہ یہ پہلے بھی باہر چلے گئے تھے اور اب پھر باہر چلے گئے ہیں تو میرے خیال میں نواز شریف اور ان کی پارٹی کیلئے یہ بہت نقصان دہ ثابت ہو گا جبکہ حکومت کی ساکھ کو بھی دھچکا لگے گا۔ میرے خیال سے اگر نواز شریف اور مسلم لیگ (ن) اس سے زیادہ ریلیف لینے کی کوشش کریں گے یا کسی نے انہیں مزید ریلیف دینے کی کوشش کی تو ناصرف ریلیف لینے والا بلکہ ریلیف دینے والا بھی اپنی ساکھ متاثر کرے گا اور بہت سارے سوال اٹھ سکتے ہیں۔

مزید : قومی