کورونا وائرس کا ٹیسٹ مثبت آنے پر نرس نے خود کشی کرلی

کورونا وائرس کا ٹیسٹ مثبت آنے پر نرس نے خود کشی کرلی
کورونا وائرس کا ٹیسٹ مثبت آنے پر نرس نے خود کشی کرلی

  



روم (ڈیلی پاکستان آن لائن) کورونا وائرس سے سب سے زیادہ متاثر ہونے والے ملک اٹلی کی ایک نرس نے اپنا ٹیسٹ مثبت آنے پر اس خوف سے خود کشی کرلی کہ کہیں وہ مریضوں کو یہ بیماری منتقل کرنے کا سبب نہ بن جائے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق ایک 34 سالہ نرس جو کہ اٹلی کے سب سے زیادہ متاثر ہونے والے شہر لومباردے میں فرنٹ لائن پر کام کر رہی تھی ، اس کا کورونا وائرس کا ٹیسٹ مثبت آیا تو اس نے اپنی زندگی کا خاتمہ کرلیا۔ ڈینئیلا ٹریزی نامی نرس سان گیرارڈو ہسپتال کے آئی سی یو میں کام کرتی تھی ، اس نے خود سے مریضوں کو متاثر ہوجانے کے خوف سے اپنی زندگی کا خاتمہ کیا ہے۔

ماریو نیگری انسٹی ٹیوٹ آف فارما کولوجیکل ریسرچ کے ڈائریکٹر کا کہنا ہے کہ لومباردے شہر میں جب تک لاک ڈاﺅن نہیں تھا تو اس وقت تک طبی عملہ اور ہسپتال جانے والے مریض کورونا پھیلانے کا سب سے بڑا ذریعہ تھے۔ ’ کورونا کے مریض دوسرے مریضوں اور طبی عملے کو کورونا وائرس منتقل کرتے، یہی لوگ بے خبری میں اپنی کمیونٹی میں جاتے اور سب لوگوں کو انفیکٹ کرتے تھے جس کی وجہ سے اس شہر میں سب سے زیادہ تیزی کے ساتھ وائرس پھیلا۔‘

انہوں نے بتایا کہ اس ایک شہر میں 600 فیملی ڈاکٹر ہیں جن میں سے 134 یعنی 22 فیصد خود کورونا کا شکار ہو کر بیمار ہوچکے ہیں یا قرنطینہ میں جاچکے ہیں۔ اب تک کورونا کی وجہ سے تین ڈاکٹرز کی اموات بھی ہوچکی ہے۔ نرسنگ ہومز کی صورتحال تو اور بھی زیادہ خراب ہے، یہاں ہیلتھ کیئر کے 5800 ورکرز ہیں جن میں سے 1500 خود کورونا سے متاثر ہوچکے ہیں۔

مزید : بین الاقوامی /کورونا وائرس