باربار قانون توڑنے والے باقاعدہ مجرم کو وزیراعظم نہیں ہونا چاہیے، سراج الحق 

باربار قانون توڑنے والے باقاعدہ مجرم کو وزیراعظم نہیں ہونا چاہیے، سراج ...

  

لاہور(این این آئی)امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کہا ہے کہ جب وزیر اعظم خود بلدیاتی الیکشن کی مہم چلا رہا ہو تو یہ اس بات کی علامت ہے کہ عوام نے ان کو مسترد کر دیا۔ بار بار قانون توڑنے، الیکشن کمیشن سے جرمانے کی سزا پانے والے باقاعدہ مجرم کو اب وزیر اعظم نہیں ہونا چاہیے۔ عوام کے وسائل کے ساتھ بلدیاتی مہم چلانے والا وزیراعظم قوم کا اعتماد کھو چکا، اقتدار سے چمٹے رہنے کاکوئی اخلاقی، جمہوری، آئینی جواز نہیں رہا۔ ملک میں جاری سیاسی بحران کا خاتمہ ہونا چاہیے۔ قوم سارا کھیل دیکھ رہی ہمارے ملک کی بدقسمتی ہے کہ ایک دوسرے پر الزامات لگانے والے ذاتی مفادات کے لیے اکٹھے ہو جاتے ہیں۔ اب ہر جلسے میں مذہب پر بات کرنے والے وزیراعظم قوم کو بتائیں ریاست مدینہ کا وعدہ کر کے آج تک ان کے ہاتھ کس نے باندھ رکھے تھے؟جو ایک قدم بھی درست سمت میں نہیں اٹھا سکے؟قوم پر مسلط ظالم حکمرانوں نے ملک کی معیشت تباہ کی۔ پاکستان میں آئین اور قانون کی بالادستی کا تصور خواب بن کر رہ گیا۔ ایک طرف حکمران طبقہ عیاشیوں میں مصروف اور دولت کے انبار پر بیٹھا ہے، دوسری جانب غریب کی جھونپڑی میں چولھا نہیں جلتا، غربت اور پسماندگی کی وجہ سے ساڑھے تین کروڑ بچے سکولوں سے باہر ہیں۔ ملک میں صحت کی سہولیات غریبوں کو میسر نہیں۔ پاکستان کو مسائل سے نکالنے کے لیے اسلامی نظام درکار ہے۔جماعت اسلامی اب واحد آپشن ہے۔ جماعت اسلامی اللہ تعالی کی تائید ونصرت اور عوام کی مدد سے ملک کی عدالتوں، ایوانوں، تعلیمی اداروں میں قرآن کا نظام نافذ کرے گی۔ سودی معیشت کا خاتمہ کر کے ایک اسلامی فلاحی مملکت کی بنیاد رکھی جائے گی۔ جماعت اسلامی 26اور 27مارچ کو لوئر اور پائن دیر میں تاریخی جلسوں کا انعقادکرے گی جو آنے والے دنوں میں خطہ کی سیاسی صورت حال کا تعین کریں  گے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے دربند ضلع مانسہرہ میں ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

سراج الحق

مزید :

صفحہ آخر -