اپریل، مئی کیلئے خوردنی تیل کی درآمد پر 10فیصد ٹیکس ریلیف کی منظوری

  اپریل، مئی کیلئے خوردنی تیل کی درآمد پر 10فیصد ٹیکس ریلیف کی منظوری

  

       اسلام آباد (سٹاف رپورٹر)وزیر خزانہ شوکت ترین نے اپریل اور مئی کیلئے خوردنی تیل کی درآمد پر 10 فیصد ٹیکس ریلیف کی منظوری دیدی۔ جمعہ کو وزیر خزانہ شوکت ترین کی زیر صدارت خوردنی تیل اور گھی کی قیمتوں میں اضافے سے متعلق اجلاس ہوا۔ اجلاس کو بتایاگیاکہ عالمی مارکیٹ میں پام آئل کی ماہانہ خوردہ قیمتیں نہایت غیر مستحکم ہیں، خوردہ قیمتیں گزشتہ سال کے مقابلے میں تقریباً دو گنا بڑھ چکی ہیں۔ بتایاگیاکہ جنوری میں قیمتوں میں تقریباً 1351 ڈالر فی ٹن نمایاں اضافہ ہوا ہے۔حکومت کا پام آئل کی قیمتوں میں اضافے اور رمضان میں متوقع کمی سے نمٹنے کیلئے اہم فیصلہ کیا اس حوالے سے وزیر خزانہ نے اپریل اور مئی کیلئے خوردنی تیل کی درآمد پر 10 فیصد ٹیکس ریلیف کی منظوری دیدی۔ اعلامیہ کے مطابق خوردنی تیل کی درآمد پر ٹیکس میں چھوٹ کا اقدام مختصر مدت کے لئے کیا جا رہا ہے۔ اعلامیہ کے مطابق فیصلے کا مقصد صارفین کو خوردنی تیل کی بلاتعطل فراہمی یقینی بنانا ہے، گھی اور کھانے کے تیل کی ملک کی سالانہ طلب کا 90 فیصد درآمدات پر منحصر ہے۔شوکت ترین نے کہا ہے کہ رواں سال ملکی چینی کی پیداوار 75 لاکھ ٹن ہو گی۔ ٹوئٹر پر اپنے بیان میں انہوں نے کہاکہ گزشتہ سال کے مقابلے میں ملکی چینی کی پیداوار میں 20 لاکھ ٹن کا اضافہ کا امکان ہے،پاکستان دوبارہ اضافی چینی کی پیداوار رکھنے والے ممالک کی فہرست میں شامل ہو گیا،اس وقت ملک میں چینی کی ایکس مل قیمت 81 روپے فی کلوگرام ہے،ملک میں چینی کی قیمت گزشتہ سال کے مقابلے میں خاصی کم ہے۔

خوردنی تیل

مزید :

صفحہ اول -