ملتان میں بے ہنگم ٹریفک، انتظامیہ کو مکمل پلان عدالت جمع کرانیکا حکم 

ملتان میں بے ہنگم ٹریفک، انتظامیہ کو مکمل پلان عدالت جمع کرانیکا حکم 

  

ملتان (خصو صی  رپورٹر)لاہور ہائیکورٹ ملتان بینچ کے جج مسٹر جسٹس چوہدری عبدالعزیز نے شہر میں ٹریفک کے بے ہنگم نظام کو ٹھیک کرنے کے حوالے سے دائر درخواست پر سماعت کرتے ہوئے کہا کہ انتظامیہ مسائل کی نشاہدہی کردے عدالت احکامات جاری کردے گی۔ عدالت کو بتایا گیا کہ 9 نمبر چونگی پر کران فیلئیر کو 20 روز ہوچکے۔ 1978کی پائپ لائن بوسیدہ ہونے سے چوک واسا کا کیمپ آفس(بقیہ نمبر47صفحہ6پر)

 بن چکا ہے ابھی بھی اسے 3 ماہ درکار ہیں۔ شجاع آباد روڈ پر تجاوزات ختم کرنے پر مزاحمت کا سامنا کرنا پڑتا ہے، وسائل کے بغیر 7 سڑکوں کی نشاہدہی کی گئی ہے کسی یوٹرن کو بند کرتے ہیں تو لوگ احتجاج کرتے ہیں۔ عدالت عالیہ نے قرار دیا کہ کرنے والے لاہور سے سکھر موٹر وے ایک سال میں بناسکتے ہیں تو یہ کیوں نہیں ہوسکتا۔ اس موقع پر ڈپٹی کمشنر عامر کریم، ڈی جی ایم ڈی اے قیصر سلیم اور ڈی ایس پی ٹریفک طاہر مجید پیش ہوئے۔ عدالت نے مزید ریمارکس دیے کہ ٹریفک کے نظام کو درست کرنے کے لئے مکمل پلان بنا کر عدالت کو بتائیں، ٹریفک نظام کو درست کرنے کے حوالے سے جو مشکلات ہونگی عدالتی احکامات کے ذریعے ٹھیک کرائیں گے، آخر کیوں ٹریفک کا نظام، تجاوزات اور ٹریفک سگنل مسائل حل نہیں ہو رہے۔ڈپٹی کمشنر ملتان عامر کریم خان  نے کہا کہ وسائل کی کمی کے باوجود تجاوزات آپریشن سمیت دیگر کام کر رہے ہیں،  9 نمبر پر روزانہ کی بنیاد پر واسا کران فیلئر کو درست کرانے کے حوالے سے جائزہ لے رہا ہوں جس پر عدالت نے قرار دیا کہ نظام کو ٹھیک کرنے کے حوالے سے تمام اسٹیک ہولڈرز ملکر تفصیلی رپورٹ عدالت میں پیش کریں۔ قبل ازیں عدالت عالیہ میں پٹیشنز سجاد محمود نے ایڈووکیٹ طاہر محمود کے ذریعے دائر درخواست میں ایڈیشنل آئی جی جنوبی پنجاب، آر پی او، سی پی او، چیف ٹریفک آفیسر، کمشنر ملتان، ڈپٹی کمشنر، اسسٹنٹ کمشنرز اور ڈسٹرکٹ آفیسرز ہائی وے کو بھی فریق بنایا گیا۔ شہر کے مختلف چوراہوں پر،4، 5 ٹریفک وارڈنز اکٹھے کھڑے ہوکر ٹریفک کنٹرول کرنے کی بجائے چالان کرتے ہیں۔شہر کے چوکوں اور چوراہوں پر ٹریفک سگنلز بھی موجود نہیں، شہر کے معروف پلازے چیز اپ، مال آف ملتان، چیز ویلیو کے سامنے سڑک پر گاڑیاں کھڑی ہونے سے ٹریفک بلاک رہتی ہے۔ شہر میں وہاڑی چوک، ڈبل پھاٹک، 9 نمبر، 14 نمبر، سدرن بائی پاس، 6 نمبر سمیت مختلف جگہوں پر گھنٹوں ٹریفک بلاک رہنا معمول بن گیا ہے، ڈبل پھاٹک سے ناگ شاہ تک متعدد جگہوں پر یوٹرن بنائے جانے سے حادثات بڑھ گئے ہیں۔کمشنر ملتان کو درخواست دینے کے باوجود سڑک پر یوٹرن پر سپیڈ بریکر نہیں بنائے گئے، شہر کے فلائی اوورز پر سیفٹی تاریں نہیں ہونے سے پتنگ کی ڈور سے انسانی جانوں کے ضائع ہونے کے حادثات بڑھ گئے ہیں۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -