ڈیرہ کے تاجروں کے نمائندہ وفد کی کمشنر انکم ٹیکس عرفان عزیز سے ملاقات

ڈیرہ کے تاجروں کے نمائندہ وفد کی کمشنر انکم ٹیکس عرفان عزیز سے ملاقات

  

ڈیر ہ اسماعیل خان(بیورورپورٹ)ڈیرہ کے تاجروں کے نمائندہ وفد کی کمشنر انکم ٹیکس عرفان عزیز سے ایف بی آر دفتر ڈیرہ میں ملاقات، ڈیرہ کی کمرشل، رہائشی اور زرعی اراضیات کی ویلیوایشن میں یکطرفہ کئی سو گنا اضافہ پر اپنی تشویش سے آگاہ کیا۔ تفصیلات کے مطابق ڈیرہ کے مرکزی انجمن تاجران، تاجر اتحاد، تاجر ایکشن کمیٹی اور پراپرٹی ڈیلرز ایسوسی ایشن کے ایک نمائندہ وفد جس کی قیادت صوبائی نائب صدر انجمن تاجران سہیل احمد اعظمی اور راجہ اختر علی نے کی، وفد میں سٹی میئر تحصیل ڈیرہ کے سابق امیدوارو معروف کاروباری شخصیت کفیل احمد نظامی، حامد علی رحمانی، حاجی خالد ناز، محمد خالد، خرم شہزاد، محمد سہیل، فضل الرحمن، امان اللہ، اشفاق چغتائی اور دیگر شامل تھے۔ سہیل احمد اعظمی نے کمشنر انکم ٹیکس ان لینڈ ریونیو عرفان عزیز، ایڈیشنل کمشنر سلطان محمد نواز ناصرکو ضلع ڈیرہ اسماعیل خان اور ملحقہ تحاصیلوں میں اندرون و بیرون شہر اراضیات جن میں کمرشل، نان کمرشل، رہائشی اور زرعی اراضیات شامل ہیں کی ویلیو ایشن میں کئی سو گنااضافے کے بارے میں اپنے تحفظات اور تشویش سے آگاہ کیا کہ جسکے باعث انتقالات اراضی و رجسٹری کی فیسوں میں کئی گنا اضافہ ہوگیا ہے جو ہر شخص کی دسترس سے باہر ہے جسکے باعث گزشتہ کئی دنوں سے رجسٹریز و انتقالات کا سلسلہ بند ہے۔ کمشنر ان لینڈ ریونیو عرفان عزیز اور ایڈیشنل کمشنر سلطان محمد نواز ناصر نے تاجروں کی شکایات ا ور تحفظات پر انہیں تحریری عرضداشات اور اپنی تجاویز دینے کے بارے میں کہا جنہیں چیئر مین ایف بی آر، چیف کمشنر و دیگر متعلقہ افسران کو بھیجا جائے گا۔ انہوں نے بتایا کہ ڈیرہ کی ویلیو ایشن کے سلسلہ میں عرصہ دو سال سے غورو خوض جاری تھا جس میں ڈیرہ کے بعض پراپرٹی ڈیلرز کی دو رکنی کمیٹی کو شامل کیا گیا تھا لیکن کمیٹی کے اراکین نے نہ تو تجاویز دیں اور نہ ہی کسی اجلاس میں شرکت کی۔ تاجرنمائندوں نے کمشنر ان لینڈ ریونیو سے درخواست کی کہ آئندہ تاجروں کے حقیقی نمائندوں کو ایسے حساس معاملات میں شامل کیا جائے۔ انہوں نے ڈیرہ کے تاجروں کو سابقہ بقایا جات کی مد میں نوٹسز بھجوانے کی شکایات بھی کمشنر کے گوش گزار کیں۔ تاجر نمائندوں نے کمشنر کو اس سلسلے میں اپنا قانونی و جمہوری حق استعمال کرنے بارے میں بھی آگاہ کیا۔ اجلاس میں کمشنر ان لینڈ ریونیو نے بتایا کہ ہبہ، تملیق اور وراثت کے انتقال پر کوئی ٹیکس لاگو نہیں ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -