نئی دہلی،انتہا پسند ہندؤوں کا ”گوشت“ رکھنے پر مسلمان جوڑے پربدترین تشدد

نئی دہلی،انتہا پسند ہندؤوں کا ”گوشت“ رکھنے پر مسلمان جوڑے پربدترین تشدد

  

نئی دہلی(آئی این پی)بھارت میں ہونے والے حالیہ انتخابات میں ملک کی قوم پرست جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی(بی جے پی)کی کامیابی کے اعلان کے دوسرے ہی روز مشتعل ہجوم نے مبینہ طور پر گائے کا گوشت لے جانے والے مسلمان جوڑے کو بد ترین تشدد کا نشانہ بنا دیا۔بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق واقعے سے متعلق سوشل میڈیا پر سامنے آنے والی ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ مشتعل ہجوم نے پہلے مسلمان نوجوان کو بدترین تشدد کا نشانہ بنایا۔مشتعل ہجوم میں شامل افراد، جن میں سے بعض نے چہرے ڈھانپ رکھے تھے، نے نوجوان کو ڈنڈوں اور لاتوں سے تشدد کا نشانہ بنایا اور اس دوران اسے نازیبا الفاظ سے بھی پکارتے رہے جبکہ اس دوران نوجوان ان سے رحم کی اپیل کرتا رہا۔بعد ازاں ہجوم نے نوجوان کو مجبور کیا کہ وہ اپنی اہلیہ پر تشدد کرے۔ویڈیو میں مزید دیکھا جاسکتا ہے کہ مشتعل ہجوم نے مسلمان جوڑے کو گھیرے میں لے رکھا ہے اور نوجوان کو اس کی اہلیہ پر تشدد کے لیے کہا جارہا ہے، جس کے نتیجے میں نوجوان نے اپنی اہلیہ کے سر میں جوتے برسائے اور ساتھ ہی ان سے ”جے شری رام“کے نعرے بھی لگوائے گئے۔

تشدد

مزید :

صفحہ اول -