رتو ڈیرو میں ایچ آئی وی ایڈز کی وجہ استعمال شدہ سرنجوں کا دوبارہ استعمال ہوسکتا ہے،ڈاکٹر ظفر مرزا

رتو ڈیرو میں ایچ آئی وی ایڈز کی وجہ استعمال شدہ سرنجوں کا دوبارہ استعمال ...
رتو ڈیرو میں ایچ آئی وی ایڈز کی وجہ استعمال شدہ سرنجوں کا دوبارہ استعمال ہوسکتا ہے،ڈاکٹر ظفر مرزا

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا کا کہنا ہے کہ رتو ڈیرو میں ایچ آئی وی ایڈز کی وجہ استعمال شدہ سرنجوں کا دوبارہ استعمال ہوسکتا ہے۔

وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزانے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ وزیرصحت سندھ کیساتھ رابطے میں ہوں ان کے ہمراہ23مئی کولاڑکانہ گیا،رتوڈیرومیں ایچ آئی وی کے مریضوں کی تعدادمیں اضافہ تشویشناک ہے،انہوں نے کہا کہ کل تک 681 افرادمیں ایچ آئی وی کی تشخیص ہوئی،681 میں سے 537 بچوں میں ایچ آئی وی کی تصدیق ہوئی جبکہ متاثرہ بچوں کے والدین کے ٹیسٹ نیگیٹوآئے۔

ڈاکٹرظفرمرزا نے کہا کہ رتوڈیرومیں 21 ہزار 375 افرادکی سکریننگ کی گئی،استعمال شدہ سرنجوں کادوبارہ استعمال مرض کے پھیلنے کی وجہ ہے،انہوں نے کہا کہ صورتحال کے باعث عالمی ادارہ صحت کی ٹیم بلائی گئی ہے،عالمی ادارہ صحت کی ٹیم ایچ آئی وی پھیلنے کی وجوہات کاتعین کریگی۔وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے صحت نے کہا کہ حکومت سندھ کوشش کررہی ہے مگروہ ناکافی ہیں،بچوں کے والدین ایچ آئی وی سے متاثر نہیں،ہیپاٹائٹس سے متاثرہ سب سے زیادہ مریض پاکستان میں ہیں۔

انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت صوبائی حکومت کے ساتھ کام کر رہی ہے، یہ مرض اب قابو سے باہر ہوتا جا رہا ہے، اسی حوالے سے ہم نے 3 ٹریٹمنٹ سینٹرلاڑکانہ میں بنائے ہیں، انہوںنے کہا کہ اگرکسی بچے میں اس مرض کی تشخیص ہوتواسے پوری زندگی دوا کھانی ہوتی ہے، صوبائی حکومت کو لانگ ٹرم میں سوچنا ہوگا۔انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کے ہمراہ مختلف ہسپتالوں کے دورے کئے، وزیراعظم عمران خان آئندہ 2 ہفتوں میں صحت کے حوالے سے بہت بڑا اعلان کرنے والے ہیں۔

مزید : اہم خبریں /قومی