چین نے مسلمان خاتون کو 15ماہ گرفتار کئے رکھا، پھر اس کے امریکی شہری بیٹے نے شور مچایا تو چھوڑ دیا لیکن پھر اگلے ہی دن اسے۔۔۔

چین نے مسلمان خاتون کو 15ماہ گرفتار کئے رکھا، پھر اس کے امریکی شہری بیٹے نے ...
چین نے مسلمان خاتون کو 15ماہ گرفتار کئے رکھا، پھر اس کے امریکی شہری بیٹے نے شور مچایا تو چھوڑ دیا لیکن پھر اگلے ہی دن اسے۔۔۔

  


بیجنگ(مانیٹرنگ ڈیسک) چینی حکومت نے 10لاکھ سے زائد یغور مسلمانوں کو حراستی کیمپوں میں قید کر رکھا ہے جہاں انسانی حقوق کے کارکنوں کے مطابق ان پر بہیمانہ تشدد کیا جارہا ہے اور انہیں زبردستی اسلامی شعار اور اپنے عقیدے سے دور کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ ان دس لاکھ سے زائد مسلمانوں میں ایک خاتون فیرکت جاودت (Ferkat Jawdat)نامی نوجوان کی والدہ بھی ہے جو گزشتہ 15ماہ سے ایک حراستی کیمپ میں قید تھی۔ فیرکت جاودت امریکی شہری بھی ہے اور امریکہ میں مقیم ہے، چنانچہ وہاں وہ اپنی والدہ کی اس جبری گرفتاری پر شدید تنقید کر رہا تھا، جس پر چینی پولیس نے اسے خاموش کرانے کے لیے اس کی والدہ کو رہا کر دیا اور اگلے ہی روز دوبارہ پکڑ کر اس جیل نما کیمپ میں قید کر دیا۔

فیرکت جاودت کا کہنا تھا کہ ”ان لوگوں نے میری والدہ کو چند گھنٹوں کے لیے صرف اس لیے رہا کیا تاکہ وہ مجھے خاموش کرا سکے۔ ایک سال سے زائد عرصے کے بعد میری ماں نے 17مئی کو میرے ساتھ فون پر رابطہ کیا اور بتایا کہ اسے حراستی کیمپ سے رہا کر دیا گیا ہے۔ میں اور میری ماں اس قدر جذباتی ہو گئے کہ فون پر روتے رہے اور باتیں کرتے رہے۔ میں خوش تھا کہ مجھے اپنی ماں کی آواز سنائی دی تھی۔ میری ماں نے مجھے بتایا کہ کیمپ نے اسے تعلیم دی جاتی رہی ہے اور اب وہ پہلے سے زیادہ تعلیم یافتہ ہے، اب وہ تمام چینی قوانین کے بارے میں جانتی ہے، لیکن اگلے ہی روز پولیس والوں نے میری ماں کو قید میں ڈال دیا۔ وہ مجھے جو کچھ بتا رہی تھی، اس پر مجھے پہلے ہی شک تھا۔ میں سمجھ سکتا تھا کہ وہ یہ سب کچھ بول نہیں رہی بلکہ اس سے بلوایا جا رہا ہے، جو اس کے اگلے روز دوبارہ غائب ہو جانے پر ثابت بھی ہو گیا۔ اگلے روز میری دادی، جو ہسپتال میں داخل ہے، نے بتایا کہ میری ماں جتنی دیر رہا ہو کر دادی کے پاس رہی، اتنی دیر 6پولیس والے اس کی مسلسل نگرانی کرتے رہے اور اس نے فون پر مجھے جو کچھ کہا تھا وہ ان پولیس والوں نے ہی کہلوایا تھا۔“رپورٹ کے مطابق انسانی حقوق کی تنظیموں کا کہنا ہے کہ ”ان حراستی کیمپوں میں مسلمان مردوخواتین پر بدترین جنسی و جسمانی تشدد کیا جاتا ہے اور اب تک تشدد کے باعث متعدد ہلاکتوں کی خبریں بھی آ چکی ہیں۔“

مزید : بین الاقوامی