طیارہ حادثہ، جاں بحق افراد کے لواحقین میں مالی امداد کی تقسیم شروع، اب تک کتنی لاشوں کی شناخت ہوسکی؟پی آئی اے ترجمان نے بتادیا

طیارہ حادثہ، جاں بحق افراد کے لواحقین میں مالی امداد کی تقسیم شروع، اب تک ...
طیارہ حادثہ، جاں بحق افراد کے لواحقین میں مالی امداد کی تقسیم شروع، اب تک کتنی لاشوں کی شناخت ہوسکی؟پی آئی اے ترجمان نے بتادیا

  

کراچی(ویب ڈیسک) طیارہ حادثے میں جاں بحق ہونے والے مسافروں میں سے 41 کی شناخت کرلی گئی ہے جس کے بعد میتوں کو ورثا کے حوالے کردیا گیا ہے، طیارہ حادثے میں جاں بحق ہونے والے افراد کے لواحقین اور پسماندگان کو دس لاکھ روپے فی کس کے حساب سے گھروں پر دینے کا عمل بھی شروع کردیا گیا ہے۔

ہم نیوز نے قومی ایئر لائن پی آئی اے ترجمان کے حوالے سے بتایا ہے کہ 41 میتیں شناخت کے بعد ورثا کے حوالے کردی گئی ہیں جب کہ باقی میتیں شناخت کے لیے ایدھی فاؤندیشن اور چھیپا ویلفیئر کے سرد خانوں میں رکھی گئی ہیں۔پی آئی اے ترجمان کا کہنا ہے کہ طیارہ حادثہ میں جاں بحق ہونے والے مسافروں کے لواحقین اور پسماندگان کو انٹرنیشنل اور ڈومیسٹک ٹکٹیں جاری کی گئی ہیں۔ترجمان کا کہنا ہے کہ اب تک چار میتیں لاہور اور تین اسلام آباد بھجوائی جا چکی ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ میتوں کو وزیراعظم عمران خان کی خصوصی ہدایت پر گھروں تک پہنچایا جا رہا ہے۔

رپورٹ  کے مطابق طیارہ حادثے میں جاں بحق ہونے والے افراد کے لواحقین اور پسماندگان کو دس لاکھ روپے فی کس کے حساب سے گھروں پر دینے کا عمل بھی شروع کردیا گیا ہے۔ترجمان پی آئی اے کا کہنا ہے کہ لواحقین اور پسماندگان کی خدمت کے لیے پی آئی اے کا عملہ 24 گھنٹے ایمرجنسی رسپانس سینٹر پر موجود ہے۔

پی آئی اے کے ترجمان کا مؤقف ہے کہ متاثرہ گھروں اور املاک کو پہنچنے والے نقصانات کا بھی تخمینہ لگانے کے لیے سروے ٹیم نے کام شروع کردیا ہے،  شناخت کی منتظر میتوں کے ڈی این اے ٹیسٹ کی رپورٹس کا انتظار ہے۔ترجمان پی آئی اے کا کہنا ہے کہ حادثے میں جاں بحق ہونے والے مسافروں کے لواحقین اور پسماندگان کے ساتھ مسلسل رابطے میں ہیں اور انہیں ساری صورتحال سے آگاہ رکھے ہوئے ہیں۔

عید الفطر کے دن بھی سی ای او پی آئی اے سمیت دیگر تمام متعلقہ حکام قائم کردہ ایمرجنسی رسپانس سینٹر پرموجود تھے اور لواحقین کو صورتحال سے آگاہ کررہے تھے۔سی ای او پی آئی اے ایئر مارشل ارشد ملک نے گزشتہ روز کہا تھا کہ وہ میتوں کی ان کے آبائی علاقوں کی منتقلی سے متعلق تمام امور کی خود نگرانی کررہے ہیں۔وفاقی وزیر برائے آبی وسائل فیصل واوڈا نے گزشتہ روز شکایت کی تھی کہ ڈی این اے کے بروقت ٹیسٹ میں کچھ مشکلات درپیش ہیں۔ انہوں نے اس ضمن میں وزیراعظم عمران خان کو بھی آگاہی دی تھی۔

مزید :

قومی -