" طیارہ بجلی کی تاروں پرگرنے سے زیادہ افراد جاں بحق ہوئے ہیں،میرے بھائی کے کپڑے ٹھیک تھے وہ ۔ ۔ ۔" شہدا کے بھائی نے نئی بات بتادی

" طیارہ بجلی کی تاروں پرگرنے سے زیادہ افراد جاں بحق ہوئے ہیں،میرے بھائی کے ...

  

کراچی (ویب ڈیسک) کراچی میں پیش آنے والے طیارہ حادثے میں لاشوں کی شناخت کا عمل جاری ہے جس کے بعد میتوں کو لواحقین کے حوالے کیا جا رہا ہے،حادثے میں جاں بحق تین دوستوں کی میتیں اسلام آباد ائیرپورٹ پہنچا دی گئیں جن میں دو کزن اور ان کا ایک دوست بھی شامل ہے،  حادثے میں جاں بحق دوکزنز کے بھائی کا  کہنا تھا کہ طیارہ بجلی کی تاروں پرگرنے سے زیادہ افراد جاں بحق ہوئے ہیں۔

 جیونیوز کے مطابق طیارہ حادثے میں جاں بحق ہونے والے راجہ آصف اور سید دانش آپس میں کزن تھے اور جاں بحق ہونے والے دونوں کے دوست ملک ذیشان بھی تھے۔تینوں کی میتیں وزیر اعظم عمران خان کی ہدایت پر حلقے کے ایم این اے عامر کیانی اور خرم نواز نے وصول کیں۔ایم این اے خرم نواز اور عامر کیانی نے جیو نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ طیارہ حادثے میں جاں بحق دو کزن ایک ہی گھر میں رہتے تھے جب کہ تیسرا ان کا دوست تھا جو سانحہ میں جاں بحق ہوا۔

عامر کیانی کا کہنا تھا کہ طیارہ حادثے میں جاں بحق دو کزنز راجہ آصف اور سید دانش کی میتیں راولپنڈی بھجوادی گئی ہیں جب کہ ملک ذیشان کی میت آبائی علاقے پنڈی گھیب روانہ کر دی گئی ہے۔دوسری جانب حادثے میں جاں بحق دوکزنز کے بھائی کا جیو نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ طیارہ بجلی کی تاروں پرگرنے سے زیادہ افراد جاں بحق ہوئے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ میرے بھائی کے کپڑے ٹھیک تھے وہ کرنٹ سے جاں بحق ہوا، جلا نہیں تھا۔

واضح رہے کہ گزشتہ دنوں لاہور سے کراچی آنے والے طیارے کے حادثے میں عملے کے 8 ارکان سمیت 97 افراد جاں بحق ہوگئے تھے جبکہ 2 مسافر معجزانہ طور پر محفوظ رہے تھے۔

مزید :

قومی -