محبوبہ کا قتل چھپانے کیلئے نوجوان نے مزید 9افرادکو موت کے گھاٹ اتار دیا

محبوبہ کا قتل چھپانے کیلئے نوجوان نے مزید 9افرادکو موت کے گھاٹ اتار دیا
محبوبہ کا قتل چھپانے کیلئے نوجوان نے مزید 9افرادکو موت کے گھاٹ اتار دیا

  

نئی دہلی(ڈیلی پاکستان آن لائن+آئی این پی)بھارت میں قاتل نے اپنی محبوبہ کے ایک قتل کو چھپانے کے لیے مزید۹ افراد کی جان لے لی اور ان کی لاشیں ایک کنویں میں پھینک دیں۔

بھارتی میڈیا کے مطابق ریاست تلنگانہ میں پولیس نے 24 سالہ نوجوان کو 9 افراد کے قتل کے الزام میں گرفتار کیا ہے،مقتولین ایک ہی خاندان سے وابستہ ہیں،قاتل نے کھانے میں نیند کی گولیاں ملا کر تمام افراد کو کنویں میں پھینک دیا جس سے وہ ہلاک ہوگئے،ملزم کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔بھارتی میڈیا کا بتانا ہے کہ تلنگانہ کے ضلع ورنگل کے ایک گاؤں کے کنویں سے اکیس، بائیس مئی کو9 افراد کی لاشیں برآمد ہوئیں جن میں سے 6 افراد کا تعلق ایک ہی فیملی سے تھا۔پولیس نے بتایا کہ ملزم نے مارچ میں لاپتا ہوکر قتل کی جانے والی ایک خاتون کے قتل کو چھپانے کے لیے مزید 9 افراد کی جان لی، سنجے کمار نامی قاتل نے کھانے میں نیند کی گولیاں ملا کر تمام افراد کو ایک ایک کرکے کنویں میں پھینک دیا جس سے وہ ہلاک ہوگئے۔

پولیس کے مطابق مارچ کے مہینے میں لاپتا ہونے والی خاتون کا تعلق بھی ملزم کے خاندان سے تھا، ملزم نے خاتون کو قتل کیا اور اس جرم پر پردہ ڈالنا چاہتا تھا۔پولیس نے بتایا کہ قتل کیے جانے والوں میں میاں بیوی ان کے 4 بچے اور دیگر 3 افراد شامل ہیں جن کی لاشیں ایک کنویں سے ملیں۔پولیس کا بتانا ہے کہ ایک خاتون نے ملزم کو دھمکی دی تھی کہ وہ لاپتا ہونے والی خاتون کے بارے میں پولیس کو آگاہ کرے گی جس پر ملزم نے ایک ڈرامہ رچایا اور قتل کیے گئے افراد کے خودکشی کرنے کا دعوی کیا تاہم پولیس کو قتل کیے گئے افراد کی لاشوں سے خودکشی کے کوئی شواہد نہیں ملے جس ملزم سے تفتیش کی گئی تو اس نے اپنے جرم کا اعتراف کرلیا اور بتایا کہ ایک خاتون کا قتل چھپانے کے لیے یہ سب کچھ کیا جس کی ساتھ اس کے تعلقات رہے ہیں، خاتون اپنے خاوند کو چھوڑ کر بچوں سمیت ٓفیملی کے پاس آئی تھی اور ملزم اور وہ خاتون ایک ہی فیکٹری میں کام کررہے تھے جس کے دوران دونوں کے تعلقات استوار ہوگئے، ملزم نے مکان کرائے پر لیا اور اسی خاتون کیساتھ رہنے لگالیکن ملزم نے اس کی بیٹی کیساتھ غلیظ حرکت کی کوشش کی تو معاملات بگڑ گئے، ملزم نے بچوں کی ماں کو قتل کرنے کا منصوبہ بنایا لیکن اس کی رشتہ دار مقتولہ فیملی کو بتایا کہ وہ اس کو مغربی بنگال میں شادی کی بات کرنے کے لیے خاتون کے والدین کے گھر لے جارہا ہے، ٹرین میں سوار ہوئے اور راستے میں نشہ آور دودھ پلا کر موت کے گھاٹ اتار دیا اور لاش کو پھینک دیا، اپنا کام کرنے کے بعد ملزم واپس آگیا اور جب اس فیملی نے خاتون کے بارے میں دریافت کیا تو انہیں بتایا کہ وہ اپنے والدین کے گھر پہنچ چکی ہے اور بعد میں واپس آئے گی لیکن جب اس فیملی نے پولیس سے رابطے کی دھمکی دی تو ملزم نے ان کا کام بھی تمام کردیا۔

مزید :

بین الاقوامی -جرم و انصاف -