طیارہ حادثے کا ذمہ دار کون؟پیپلز پارٹی کے رہنما اورسابق وزیر داخلہ نے کھول کھول کر بیان کر دیا

طیارہ حادثے کا ذمہ دار کون؟پیپلز پارٹی کے رہنما اورسابق وزیر داخلہ نے کھول ...
طیارہ حادثے کا ذمہ دار کون؟پیپلز پارٹی کے رہنما اورسابق وزیر داخلہ نے کھول کھول کر بیان کر دیا

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)چئیرمین قائمہ کمیٹی داخلہ اور پاکستان پیپلز پارٹی کے سینئر رہنما سینیٹر رحمان ملک نےایف آئی اے کو ہدایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ جہاز کو فوم بچھائے بغیر اترنے کیلئے کہنا ایک مجرمانہ غفلت و سنگین غلطی ہے،اگر بیلی لینڈنگ کرنے دیا ہوتا تو جہاز کو نقصان ہوتا مگر قیمتی جانیں بچ سکتی تھیں، غلطی سول ایویشن اتھارٹی کے عملے کی ہے جو ٹاور میں ڈیوٹی پر مامور تھے، فیڈرل انویسٹی گیشن ایجنسی طیارہ حادثے میں غفلت برتنے والوں کے خلاف قانونی کارروائی کرے۔

تفصیلات کے مطابق سینیٹر رحمان ملک نے فیڈرل انویسٹی گیشن ایجنسی کو ہدایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ اب وقت ہے کہ سول ایوی ایشن  میں موجود غلطیوں کا خاتمہ ہو اور ضروری قانون سازی کیجائے، پی آئی اے کو نئے و جدید تقاضوں کے مطابق کرنا ہوگا،سی اے اے کا پرانا مینول اب جدید کرنا پڑ یگا۔سینیٹر رحمان ملک کا کہنا تھا کہ اگر بیلی لینڈنگ کرنے دیا ہوتا تو جہاز کو نقصان ہوتا مگر قیمتی جانیں بچ سکتی تھیں،غلطی سول ایویشن اتھارٹی کے عملے کی ہے جو ٹاور میں ڈیوٹی پر مامور تھے،سول ایویشن اتھارٹی کیوں و کیسے ہنگامی صورتحال کو سنبھال نہ سکا؟ایف آئی اے غفلت برتنے والوں کیخلاف قانونی کاروائی کرے۔سینیٹر رحمان ملک کا کہنا تھا کہ سوال پیدا ہوتا ہے کہ ہنگامی صورتحال میں جہاز کو بیلی لینڈنگ کیوں نہیں کرنے دیا؟دیکھا جائے کہ حادثے کے وقت بیلی لینڈنگ کے انتظامات الرٹ کئے گئے تھے؟کیا بیلی لینڈنگ کا عملہ و مکمل انتظامات رن وے پر موجود و تیار تھے،جب کیپٹن نے کہا کہ لینڈنگ گیر خراب ہیں تو سی اے اے کو لازم تھا کہ بیلی لینڈنگ کرواتا۔

انہوں نے کہا کہ کیپٹن سجاد گل پیشہ ور تھے اورانھوں نے بروقت گیئر لاک کرنے کے بارے میں ٹاور کو آگاہ کیا، ٹاور کو چاہئے تھا کہ فوری طور پر فوم بچا کر جہاز کو بیلی لینڈنگ کروا دیتے،یہ ایک نہایت اہم قومی مسئلہ ہے جسکی پیشہ ورانہ تفتیش کی ضرورت ہے ،اگر انجن میں کوئی فنی خرابی ہوتی تو کیسے جہاز نے لینڈنگ اور ٹیک آف کیا؟بیلی لینڈنگ انتطامات کے بغیر جہاز کو لینڈ کرنے کی اجازت دینا مجرمانہ غفلت و سنگین غلطی تھی۔ سینیٹر رحمان ملک نے کہا کہ پہلے روز میں نے وثوق سے کہا تھا کہ انجن جہاز کا زمین سے ٹکرانے کے بعد تباہ ہوئے،عوام اور تمام متاثرہ خاندان طیارہ حادثہ کی قطعی وجوہات جاننا چاہتے ہیں۔

مزید :

قومی -