پتوکی میں ڈاکوؤں کی والد کے سامنے 15 سالہ لڑکی سے زیادتی

پتوکی میں ڈاکوؤں کی والد کے سامنے 15 سالہ لڑکی سے زیادتی
پتوکی میں ڈاکوؤں کی والد کے سامنے 15 سالہ لڑکی سے زیادتی

  

قصور (ڈیلی پاکستان آن لائن)  پتوکی میں ڈاکوؤں نےوالد کے سامنے 15 سالہ لڑکی کوزیادتی کا نشانہ بنا ڈالا۔ متاثرہ لڑکی کو میڈیکل کے لئے ہسپتال منتقل کردیا گیا جبکہ  ایک مشکوک شخص کو حراست میں لے لیا گیا۔

انگریزی جریدے ڈیلی ٹائمز کے مطابق درخواست گزار "ز ا" نے پولیس کو بتایا کہ وہ شادی کی ایک تقریب سے بیٹی  اور پانچ سالہ بیٹے کے ہمراہ واپس آرہا تھا کہ انہیں پتوکی چونیاں بائی پاس پر ڈاکوئوں نے گھیر لیااور ایک کھیت میں لے گئے، اسے رسیوں سے باندھا اور بیٹی کو اس کی آنکھوں کے سامنے ہوس کا نشانہ بناڈالا، بعد میں ملزمان نے کچھ لوگوں کو دیکھا تو بھاگ کھڑے ہوئے لیکن اپنی موٹرسائیکل وہیں چھوڑ گئے۔

واقعے کی اطلاع ملنے کے بعد صدر پولیس جائے وقوعہ پر پہنچ گئی اور متاثرہ تینوں افراد کو تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال منتقل کردیا جہاں ابتدائی میڈیکل ٹیسٹ میں لڑکی سے زیادتی کی تصدیق ہوگئی ۔ پولیس نے نامعلوم افراد کیخلاف مقدمہ درج کرلیا اور برآمد ہونیوالی موٹرسائیکل بھی چوری کی نکلی جس کا مقدمہ اوکاڑہ میں درج تھا۔

ڈی پی او قصورمحمد صہیب اشرف کے مطابق پنجاب فرانزک لیب اورکرائم سین یونٹ کی ٹیمیں جائے وقوع سے شواہد اکٹھے کررہی ہیں۔ ملزمان کی گرفتاری کے لئے سی اے اے اورضلعی پولیس کی 5 ٹیمیں تشکیل دے دی گئی ہیں۔آئی جی پنجاب  راؤ سردار علی خان نے زیادتی کے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے ملزمان کو جلد گرفتارکرنے کی ہدایت کی ہے۔

وزیراعلیٰ پنجاب حمزہ شہباز نے پتوکی کے علاقے چونیاں بائی پاس پر ڈاکوؤں کی لڑکی سے زیادتی کے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے انسپکڑ جنرل پولیس سے رپورٹ طلب کرلی۔ حمزہ شہباز نے ملزمان کی جلد گرفتاری اور متاثرہ لڑکی کوانصاف کی فراہمی یقینی بنانے کی ہدایت دی۔

مزید :

جرم و انصاف -علاقائی -پنجاب -لاہور -قصور -