حکومت کی میعاد ایک سال دو ماہ ہے ، عمران نیازی بھول میں نہ رہیں، وزیر اعظم نے واضح کر دیا

حکومت کی میعاد ایک سال دو ماہ ہے ، عمران نیازی بھول میں نہ رہیں، وزیر اعظم نے ...
حکومت کی میعاد ایک سال دو ماہ ہے ، عمران نیازی بھول میں نہ رہیں، وزیر اعظم نے واضح کر دیا

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن ) وزیر اعظم شہباز شریف نے چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کی چھ روز کی ڈیڈ لائن پر واضح کر دیاکہ  حکومت کی میعاد ایک سال اور دو ماہ ہے ، عمران نیازی کسی بھول میں نہ رہیں ۔

قومی اسمبلی میں خطاب کے دوران وزیر اعظم شہباز شریف نےکہا کہ ایوان فیصلہ کرے کہ الیکشن کب کرانے ہیں ، میں جتھے کے سربراہ کو واضح کرتا ہوں تمہاری ڈکٹیشن نہیں چلے گی ،بات الیکشن کی تھی تو ایوان میں آتے،بات چیت کیلئےدوازے کھلے ہیں ، کمیٹی بنانے کو تیا رہیں،اگر تمہارا خیال ہے کہ بلیک میل یا ڈکٹیٹ کر لو گے تو گھر میں کرو۔ 

 وزیر اعظم شہباز شریف نے  کہا کہ  ماضی کی حکومت نے معیشت کا بیڑہ غرق کیا ، آج جب حالات بہتری کی طرف جا رہے ہیں تو کیا فتنوں اور انارکی کی گنجائش ہے ؟، لاہور سے پکڑا جانے والا اسلحہ  اسلام آباد لایا جا رہا تھا ۔ آج دوبارہ 2014  کے دلخراش واقعات کی کوشش کی گئی ، اگر تاریخ کو دہرایا گیا تو خالی ہاتھ رہ جائیں گے اور کچھ نہیں بچے گا، میں یہ عرض کرنا چاہتا ہوں کہ عدلیہ اور اداروں کو کس طرح بدنام کیا جا رہا ہے ، کل سپریم کورٹ کا فیصلہ آیا کیا ہم میں سے کسی نے اس کے خلاف ایک لفظ بھی کہا  لیکن یہ کہتے ہیں کہ فلاں جج میرا کیس سنے تو میں تیار ہوں ، جب اسی جج نے ان کے خلاف فیصلہ دیا تو ان کے خلاف ہرزہ سرائی شروع کر دی گئی ۔

شہباز شریف نے کہا کہ اگر فیصلے ان کے حق میں آجائیں تو سب اچھا ہے لیکن ان کے خلا ف فیصلے آنے پر یہ اداروں کو گالیاں دینا شروع کر دیتے ہیں، یہ کب تک چلے گا؟ ، اگر ایسا ہی چلتا رہا تو سب کچھ جام ہو جائے گا۔  پاکستان بھارت سے کہیں  آگے تھا اور کئی معاملات میں بھارت ہم سے آگے تھا ، 90 کی دہائی میں  پاکستانی روپے کی قدر بھارتی روپے سے زیادہ تھی ،  بھارت نے ہماری معیشت کو کاپی کیا، مگر آج بھارت کی آئی ٹی کی ایکسپورٹ  200 ارب ڈالرز ہے جبکہ پاکستان کی آئی ٹی ایکسپورٹ ڈیڑھ ارب ڈالرز ہے ۔

وزیر اعظم نے الیکشن ایکٹ 2017 میں ترمیم کا بل منظور کرنے پر مباکباد دیتے ہوئے کہا کہ مخلوط حکومت کے دو اہداف تھے  جن میں سے ایک آئندہ انتخابات کو شفاف  بنانا تھا۔ الیکشن ایکٹ 2017 میں ترمیم کا بل منظور کرنے پر  یہ ایوان ،  جناب سپیکر  آپ ، جماعتوں کے قائدین اور ممبران  سمیت پوری قوم  مبارکباد کی مستحق ہے میں ،انہیں مبارکباد پیش کرتا ہوں ۔  10 اپریل 2022 تاریخ سازدن تھا، پہلی بارآئین وقانون کےمطابق عدم اعتمادکی قراردادکامیاب ہوئی، آئین کےمطابق عدم اعتمادکامیاب ہوئی اورآئینی حکومت وجودمیں آئی،پچھلی حکومت نے معیشت کا بیڑہ غرق کر دیا ، آج جب ہم محنت کر رہے ہیں تو کسی فتنہ ، انارکی کی گنجائش ہے ؟، کیا ملک میں  دوبارہ دھرنوں کی گنجائش ہے ؟۔

وزیراعظم شہبازشریف نے کہا کہ  لاہورمیں پولیس اہلکارکوشہیدکردیاگیا گیا،سپیکرپنجاب اسمبلی نےشہیداہلکارکےبارےمیں کیاالفاظ استعمال کیے،ایک صوبےکی حکومت کےسربراہ کی معاونت سےوفاق پرحملہ کیاگیا،خونی مارچ کےاعلانات کیےجاتےرہے۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -