لا ئیو سٹاک کے شعبہ پر تو جہ د ے کر ملک میں انقلا ب بر پا کیا جا سکتا ہے:ما ہر ین

لا ئیو سٹاک کے شعبہ پر تو جہ د ے کر ملک میں انقلا ب بر پا کیا جا سکتا ہے:ما ہر ...

سرگودھا(اے پی پی) لائیو سٹا ک اینڈ ڈ یری ڈویلپمنٹ کے ما ہر ین نے کہا ہے کہ پا کستان میںدودھ کی پیداوار ی صلا حیت 46.44ملین ٹن ہے اس میں سے 16.13ملین ٹن دودھ گا ئیوں اور 28.69ملین ٹن دودھ بھینسوں سے حاصل ہوتا ہے۔یہاں اے پی پی سے گفتگو میں انہوں نے کہاکہ 15فیصد دودھ ایک جگہ سے دوسر ی جگہ منتقل کر نے کی و جہ سے خراب ہو جاتا ہے، 5فیصد دودھ بچھڑے پیتے ہیں اور دودھ کا 71فیصد حصہ دیہاتی اور 29فیصد شہروں سے دستیا ب ہے۔ ملک میں لا ئیو سٹاک پر بھر پو رتو جہ د ے کر انقلا ب بر پا کیا جا سکتا ہے۔ ایک اندازے کے مطا بق اس شعبہ سے 4کروڑ افراد منسلک ہیں، پا کستان جا نو روں کی تعدا د کے حوا لہ سے د نیا میں تیسرے نمبر پر ہے جبکہ دودھ کی پیداوار کے حو الے سے پانچویں نمبر پر ہے۔انہوں ا س وقت د نیا بھر میں ہلا ل اشیا ءکی ما ر کیٹ ار بوں ڈا لر سے زا ئد کی صنعت بن چکی ہے اور عا لمی تجا ر ت میں مسلسل وسعت آر ہی ہے۔ پا کستان کی گوشت کی پیداوار ی صلا حیت 3.1ملین ٹن ہے جبکہ ممکنہ طور پر 3ارب ڈا لر کا گوشت برآ مد کرنے کی صلا حیت رکھتا ہے۔

بہتر پیداوار صلا حیت کے ذریعے پا کستان یہ گو شت وسط ایشیا ئی ریاستوں ،مشرق وسطیٰ ایران ترکی کو برآمد کرکے کثیر زر مبا د لہ کما سکتا ہے بلکہ پاکستان د نیا میں ہلا ل گوشت کے حوا لے سے د نیا کو لیڈ کر سکتا ہے۔ ا س کیلئے مویشی پا ل حضرات کی مناسب را ہنمائی اور انہیں بہتر سہو لیا ت کی فراہمی یقینی بنا نا ہو گی ا س کے ذریعے پا کستان کثیر زر مبا دلہ کما کر قو می معیشت کو مستحکم بنا سکتا ہے۔

مزید : کامرس