سی این جی کی تین ماہ تک بندش ناقابل قبول، ایسوسی ایشن کا احتجاج کا اعلان

سی این جی کی تین ماہ تک بندش ناقابل قبول، ایسوسی ایشن کا احتجاج کا اعلان
سی این جی کی تین ماہ تک بندش ناقابل قبول، ایسوسی ایشن کا احتجاج کا اعلان

  

کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک) آل پاکستان سی این جی ایسوسی ایشن کے چیئرمین غیاث عبداللہ پراچہ نے کہا ہے کہ وزارت پٹرولیم کی جانب سے موسم سرما میں تین ماہ کے لئے سی این جی کی مکمل بندش کا فیصلہ غیر قانونی، عوامی مفادات اور زمینی حقائق کے خلاف ہے جس کے خلاف ملک بھر میں بھرپور احتجاج کیا جائے گا۔دسمبر جنوری اور فروری میں سی این جی کی مکمل بندش سے عوام اور سی این جی مالکان کے مصائب، افراط ز اور ماحولیاتی آلودگی جبکہ لاکھوں افراد بے روزگار ہو جائیں گے۔ غیاث پراچہ نے ایک بیان میں کہا کہ ماضی میں کسی بھی حکومت نے تین ماہ تک سی این جی کی مسلسل بندش کا منصوبہ نہیں بنایا کیونکہ اس سے آئل امپورٹ بل اور تجارتی عدم توازن میں اضافہ جبکہ زرمبادلہ کے ذخائر، روپے کی قدر اور حکومت کے محاصل میں کمی ہو گی۔اس منصوبہ سے حکومت کو ماہانہ ستر ہزار ٹن اضافی آئل درامد کرنا ہو گاجبکہ450ارب کی سی این جی کی صنعت کو پہلے ہی ہفتہ میں دو دن چل رہی ہے مکمل طور پر تباہ ہو جائے گی۔حکومت عوامی مفاد کے خلاف فیصلے کرنے کے بجائے گیس کے قانونی استعمال اور چوری کے سدباب کو یقینی بنائے تاکہ تمام شعبوں کو انصاف کے مطابق گیس فراہم کی جا سکے۔حکومت طاقتور شعبوں کے بجائے عوام کے مفادات کا خیال رکھے اور انھیں سڑکوں پر لانے والے فیصلے نہ کرے جس کے منفی نتائج سے لاکھوں افرادبے روزگار اور کروڑوں متاثر ہو رہے ہیں،عوام کے خلاف کسی سازش کو کامیاب نہیں ہونے دیا جائے گا۔

مزید : بزنس