خادم رضوی جیسے شرپسند کوبہت پہلے گرفتار کرلیناچاہیے تھا، خواجہ عطاء اللہ

خادم رضوی جیسے شرپسند کوبہت پہلے گرفتار کرلیناچاہیے تھا، خواجہ عطاء اللہ

  



ڈیرہ غازیخان (بیورورپورٹ)خادم رضوی جیسے اسلام دشمن شرپسند کو بہت پہلے گرفتار کرلیناچاہیے تھا ،لبیک یارسول اللہ کے نعرے کی آڑ میں لوگوں کی گاڑیاں جلائی گئیں ،حکومتوں کو بلیک میل کیاگیااور معز ز ججز اور آرمی چیف کے خلاف نازیبا زبان استعمال کی گئی ،پاکستان بھرمیں300سے زائد (بقیہ نمبر32صفحہ12پر )

درباروں کے سجادہ نشین اپنے لاکھوں ارادت مندوں کے ہمراہ افوا ج پاکستان کے ساتھ کاندھے سے کاندھا ملاکر ساتھ کھڑے ہیں ،موجودہ حکومت عوام کو ریلیف دینے میں ناکام ہوچکی، حکومت 100دن گزار کر عوام سے مزید دن مانگنے کی تیاری کررہی ہے ،احتساب سب کابلاتفریق ہوناچاہیے ، حکومت نیب کوسیاسی مخالفین کو جکڑنے کیلئے بطور’’ ٹول ‘‘استعمال کررہی ہے اس کے قوانین میں ترمیم وقت کی اہم ضرورت ہے ،بے نامی اکاؤنٹس صرف پیپلز پارٹی کو بدنام کرنے کی کوشش ہے ،2014 ؁ء میں نواز شریف نے اپنابوریابستر باندھ لیاتھا لیکن پیپلز پارٹی نے جمہوریت کی خاطر نواز شریف کی حکومت کوکاندھادیا جس کا جواب انہوں نے پیپلزپارٹی توڑنے کی کوششوں سے دیا،تونسہ میں صرٖف حکومت مخالفین کی جائیدادوں کو تجاوزات کا نشانہ بنایاگیادوسروں کی جانب آنکھ اٹھاکربھی نہیں دیکھاگیا، اس حکومت کو اپوزیشن مخالفت کی ضرورت نہیں یہ اپنے کرتوتوں سے بہت جلد اپنے انجام کو پہنچے گی۔یہ بات سجادہ نشین دربارپیرپٹھان تونسہ شریف و سابق وفاقی وزیر مذہبی امورخواجہ عطاء اللہ خان نے تونسہ سے اسلام آباد جاتے ہوئے ڈیرہ غازیخان میں صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہی ، انہوں نے کہاکہ پیرپٹھان حضرت سلیمان تونسوی ؒ سے نسبت رکھنے والے ملک بھرمیں 300سے زائد درباروں کے سجادہ نشین حضرات کاموجودہ چیئرمین ہوں اور مجھ سمیت ان تمام پیروں کے لاکھوں ارادت مند میرے ایک اشارے پر ملک کی خاطر جان قربان کرنے سے گریز نہیں کریں گے انہوں نے کہاکہ ہم افواج پاکستان کے ساتھ کاندھے سے کاندھاملاکر ساتھ کھڑے ہیں ،انہوں نے تحریک لبیک یارسول اللہ کے خادم حسین رضوی کی گرفتاری پر افواج پاکستان عدلیہ اور پولیس کو مبارکباد پیش کی کہ انہوں نے دیر سے ہی سہی لیکن ایک شرپسند کو گرفتار کرلیاجس نے لبیک یارسول اللہ کے نعرے کی آڑ میں جلاؤ گھیراؤ ،دھرنے ،مارپیٹ ،دھونس دھمکی کو اپنی جماعت کا وطیرہ بنارکھاتھاانہوں نے کہاکہ جس نبیؐ کی ناموس کی خاطر جان دینے کی باتیں کی جارہی تھیں الٹالوگوں کی جان لی گئی پوری دنیامیں اسلام کامنفی پیغام پہنچایاگیااسلام تو امن کاپیغام دیتاہے بدامنی کانہیں کہ آئندہ حکومت ہوش کا ناخون لیکر ایسے مداریوں کے خلاف بروقت اقدامات کرے گی ، انہوں نے کہاکہ موجودہ حکومت عوام کوریلیف دینے میں بری طرح ناکام ہوچکی ہے پہلے تین مہینوں میں ہی عوام کو مہنگائی کی چکی میں پیس کر رکھ دیاگیاہے اور آئندہ آئی ایم ایف کی شرائف مان کر مزید پیسنے کی تیاری کی جارہی ہے ، انہوں نے کہاکہ نیب کو حکومت اپنے مخالفین کیلئے بطور ’’ٹول ‘‘ استعمال کررہی ہے نیب کے قوانین میں ترامیم وقت کی ضرورت ہیں ، ورنہ احتساب پر عوام کایقین اٹھ جائیگا،انہوں نے کہاکہ بے نامی اکاؤنٹس کاشور مچاکر پیپلز پارٹی کو بدنام کیاجارہاہے بینک کے منیجرز سے تحقیقات کے ذریعے معلوم کرایاجاسکتاہے کہ رقم کی منتقلی کس نے کس کو کی لیکن یہ صرف گورکھ دھنداہے ،انہوں نے کہاکہ میں خود اس بات کا شاہد ہوں کہ 2014 ؁ ء میں نواز شریف نے دھرنوں سے تنگ آکر اپنابوریابستر باندھ لیاتھا اورگھر جانے کی تیاری میں تھے اس کڑے وقت میں پاکستان پیپلز پارٹی نے نواز شریف حکومت کی مدد کی اور جب نواز شریف بحران سے نکل آیاتو اس نے الٹا پیپلزپارٹی کوتوڑنے کی کوششیں کی لیکن آج خود ہرطرف سے جکڑاہواہے ،خواجہ عطاء اللہ خان نے کہاکہ میرے شہر تونسہ میں صرف حکومت مخالف لوگوں پر تجاوزات کابم گرایاگیا دوسری جانب حکومتی آشیر باد رکھنے والوں کی جانب آنکھ اٹھاکر بھی نہیں دیکھاگیا۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...