بورڈ آف ریونیو کی جوڈیشل کیسز کو ہنگامی بنیادوں پر نمٹانے کی ہدایات

بورڈ آف ریونیو کی جوڈیشل کیسز کو ہنگامی بنیادوں پر نمٹانے کی ہدایات

  



لاہور( عامر بٹ سے )سینئر ممبر بورڈ آف ریونیو پنجاب طارق نجیب نجمی نے رواں سال کے دوران آنیوالے جوڈیشل کیسز کو ہنگامی بنیادوں پر نمٹانے کا ٹاسک دیدیا تمام جوڈیشل (بقیہ نمبر40صفحہ12پر )

ممبرز کو خصوصی ہدایات جاری کر دی گئی ،پنجاب کے دور دراز اضلاع سے دائر ہونے والی درخواستوں پر روزانہ کی بنیاد پر سماعت کی ہدایات ، سائلین کو بروقت انصاف کیلئے جلد از جلد جوڈیشل کیسز کی سماعت اور زیرالتواء کیسز کیلئے نیا شیڈول جاری کر دیا گیا ۔سینئر ممبر بورڈآف طارق نجیب نجمی نے کیسز میں لمبی تاریخیں دینے کی بجائے ان کو جلد ازجلد نمٹانے اوردور دراز سے آنے والے سائلین کی مشکلات کا ادراک کرتے ہوئے ایسے کیسز پر جلد فیصلہ سنانے کی ہدائت کردیں، جوڈیشل عدالتوں میں زیر سماعت کیسز کے اعدادو شمار کے مطابق ریونیو کورٹس میں ٹوٹل زیر سماعت کیسز کی تعداد12084 تھی جن میں سے سینئر ممبر بورڈآف ریونیو جواد رفیق ملک کے پاس زیر سماعت ٹوٹل 625کیسزز میں سے100کیسزز کی سماعت کی گئی جبکہ 140کیسز نئے آنے سے ٹوٹل کیسز کی تعداد 682ہے اسی طرح ممبر جوڈیشل 1 کے پاس زیر سماعت ٹوٹل 1482کیسزز میں سے120کیسزز کی سماعت ہوئی جن میں سے 74کیسزنئے دائر کئے گئے جبکہ1کیس کو دوسرے ممبرز کو ٹرانسفر کر دیا گیا اس طرح 1432کیس زیر التواء تھے ،ممبر جوڈیشل 2کے پاس ٹوٹل زیر سماعت کیسزز 697تھی جس میں سے 92کیسوں کی سماعت کی گئی ،جبکہ 54نئے کیسز آنے اور 15کیسز دوسرے ممبرز کو ٹرانسفر کرنے کے بعد ٹوٹل زیر التواء کیسز کی تعداد664ہے ،اسی طرح ممبر جوڈیشل 3 کے پاس زیر سماعت کیسزز کی تعدا د689تھی جن میں سے 168کیسزز کی سماعت کی گئی جبکہ 153کیسز نئے دائر ہونے کیساتھ زیر التواء کیسزز کی تعداد674تھی ،ممبر جوڈیشل 4کے پاس ٹوٹل زیر سماعت کیس 481تھے جن میں سے70کیسزز کی سماعت کی گئی 105کیسز نئے دائر ہونے اور7کیس دوسرے ممبرز کو ٹرانسفر کرنے سے509 کیس زیر التواء تھے،اسی ممبر جوڈیشل 5 کے پاس ٹوٹل زیر سماعت کیسزز کی تعداد207تھی جن میں سے 24کیسز کی سماعت کی گئی، 30کیسز نئے دائر ہونے اور 4 کیسز دوسرے ممبران کو ٹرانسفر آنے سے زیر التواء کیسز کی تعداد 209 تھی ، چیف سیٹلمنٹ کمشنر کے پاس 912کیسز میں سے 41کیسز کی سماعت ہوئی ،اس طرح 63کیس نئے دائر ہونے اور دو کیس دوسرے ممبران کو ٹرانسفر کرنے کے بعد ٹوٹل زیر التواء کیسز کی تعداد 932، ممبر جوڈیشل6 کی عدالت میں464 کیسز میں سے137کیسز کی سماعت ہوئی جس میں سے 71کیسز نئے دائر ہونے اور 14کیس دوسرے ممبران کو ٹرانسفر کرنے کے بعد زیر التواء کیسز کی تعداد 384ہے ممبر جوڈیشل7 نیر محمودکے پاس ٹوٹل زیر سماعت کیسزز کی تعداد575تھی جن میں سے 338کیسز کی سماعت ہوئی، 203 کیس نئے دائر ہونے اور 9کیس دوسرے ممبران کو ٹرانسفر کرنے سے ٹوٹل زیر التواء کیسزکی تعداد 630تھی ، اس طرح ممبر جوڈیشل 8کے پاس زیر سماعت 342کیسز میں سے 7کیسز کی سماعت ہوئی جبکہ 33کیس نئے دائر ہونے اور ایک کیس دوسرے ممبر کو ٹرانسفر کرنے کے بعد ٹوٹل 431کیس زیر التواء تھے ، اسی طرح ممبر کالونیزکے پاس ٹوٹل زیر سماعت کیسز کی تعداد 1402تھے جن میں سے 30کیسوں کی سماعت ہوئی،265کیس نئے آنے سے زیر التواء کیسز کی تعداد 1637 ہے جبکہ زیر التواء ہیں اسی طرح ممبر کونسلڈیشن کے پاس ٹوٹل زیر سماعت کیسزز کی تعداد 623تھی جن میں سے 6کیسز کی سماعت ہوئی 22کیسز کو متعلقہ ڈیپارٹمنٹ کو ریفر کرنے کے ساتھ120 کیس نئے دائر ہونے ا ٹوٹل زیر التوارء کیسز کی تعداد 657ہے ،فل بورڈ ایجنڈا میٹنگ میں تمام ممبرز نے کیسز کی بروقت سماعت اور جلد از جلد نمپٹانے کی یقین دھانی کروائی ہے۔سینئر ممبر بورڈ آف ریونیو طارق نجیب نجمی نے کہا کہ سائلین اور اپنے اراضی کے مسائل کے حوالے سے انصاف کی امید میں درخواست دینے والوں کو بروقت انصاف مہیا کرنا ہماری پہلی ترجیح ہے جس کے لئے میں نے تمام جوڈیشل ممبران کو واضح ہدایات جاری کی ہیں کہ تمام کیسز کو ہنگامی بنیادوں پر نمٹایا جائے ،دور دراز سے آنے والے سائلین کو لمبی تاریخیں دینے کی بجائے ان کے کیسز پر جلد از جلد فیصلہ کیا جائے ۔اس حوالے ہر جوڈیشل ممبر ماہانہ بنیادوں پر مجھے زیر سماعت اور زیر التواء کیسز کی رپورٹ پیش کرے گا۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...