تحصیل ناظم ذاتی معاملات میں فریق بننے سے گریز کریں ،عثمان

تحصیل ناظم ذاتی معاملات میں فریق بننے سے گریز کریں ،عثمان

  



مٹہ ( نمائندہ پاکستان)عثمان اور جاوید ولد ارسلاخان ساکنان بازخیلہ نے کہا ہے کہ تحصیل ناظم مٹہ لوگوں کی ذاتی معاملات میں فریق بننے سے گریز کریں وہ پوری مٹہ تحصیل کی ناظم ہے کسی مخصوص جماعت اور لوگوں کی نہیں گذشتہ روز اشاڑی پولیس چوکی سے ملزم نکالنے کیلئے رات دس بجے انا اور ملزم کو اپنے ساتھ باہر لانے کی مطلب کیا ہے تحصیل ناظم کو عوام کی درمیان صلح کرنی چایئے دو فریقوں کی درمیان جلتی اگ پر تیل ڈالنا کسی بھی ذمہ دار شخص کی ساتھ زیب نہیں دیتے پولیس سمیت تمام حکومتی اداروں کو ازاد چھوڑنا چایئے تاکہ ہر کسی کو انصاف مل سکیں تحصیل ناظم کو ملزم کو حوالات سے نکالنے سے پہلے دونوں فریقوں کی درمیان صلح کیلئے رول ادا کرنا چایئے تھے ان خیالات کا اظہار انہوں نے گذشتہ روز مٹہ پریس کلب میں ایک ہنگامی پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا دریں اثناء تحصیل ناظم مٹہ نے تمام الزامات کو مسترد کرکے بے بنیاد قرار دی پولیس نے مبینہ شخص کو تمام قانونی تقاضے پورے کرتے ہوئے ضمانت پر چھوڑ دیا تھا وہ 107میں پولیس نے چالان کیا تھا ایس ایچ مٹہ اور انچارج چوکی اشاڑی کی موقف تفصیلات کی مطابق گذشتہ روز مٹہ پریس کلب میں ایک ہنگامی پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے عثمان ولد ارسلاء خان اور انکے زخمی بھائی جاوید نے کہا کہ گذشتہ روز انکے بھائی اور ایک اور شخص مسمی علی سید ولد معصوم جان سکنہ بازخیلہ کے درمیان لڑائی ہوئی جس میں انکے بھائی سر بیلچہ مارنے سے شدید زخمی ہوا جن کو علاج کیلئے مٹہ ہسپتال لایا گیا جبکہ پولیس میں رپورٹ کرنے پر پولیس نے مسمی علی سید کو گرفتار کرکے اشاڑی چوکی کی حوالات میں بند کیا لیکن رات دس بجے انکو اطلاع ملی کہ تحصیل ناظم مٹہ عبداللہ خان پولیس چوکی اشاڑی اکر مبینہ ملزم کو حوالات نکالنا چاہتے ہے جس پر وہ اور انکی ساتھی پولیس چوکی اشاڑی پہنچ گئے اور تحصیل ناظم مٹہ سے کافی دیر تک بحث اور تکرار کی لیکن تحصیل ناظم نے یہ کہہ انکے ایک بھی نہ سنی کہ یہ کوئی 302 کی ملزم نہیں انہوں نے کہا کہ انصاف کی حکومت میں تمام سرکاری اداروں کو ازاد چھوڑنا چایئے تاکہ ہرکسی کو انصاف مل جائے انہوں نے کہا کہ تحصیل ناظم پوری مٹہ تحصیل کی ناظم ہے وہ کسی ایک پارٹی یا مخصوص لوگوں کی ناظم نہیں انہوں نے کہا کہ تحصیل ناظم مٹہ لوگوں کی ذاتی مسئلوں میں صالح کی کردار اداکریں فریق بننے سے گریز کریں انہوں نے کہا کہ ونکے بھی سیاسی قائدین تھے اور پولیس چوکی سامنے موجود تھے لیکن ذاتی باتوں پر سیاست کرنا کسی کیلئے بھی اچھی بات نہیں دریں اثناء تحصیل ناظم مٹہ عبداللہ خان سے جب رابط کیا گیا تو انہوں نے تمام باتوں کو الزامات قرار دیکر مسترد کرکے ایک پروپیگنڈا قراردیا جبکہ پولیس تھانہ مٹہ کے ایس ایچ او بخت زادہ خان اور انچارج پولیس چوکی اشاڑی ساجد خان نے کہا کہ مذکورہ شخص کو انہوں نے 107میں چالان کیا تھا اور تمام قانونی تقاضے پورے کرتے ہوئے انکو تحریری ضمانت پر رات کو رہا کردیا تھا

مزید : پشاورصفحہ آخر