وزیراعلیٰ بھارتی پنجاب مریندر سنگھ کا پاکستان آنے سے انکار بارڈر کھولنے سے تعلقات میں بہتری متوقع دفتر خارجہ

وزیراعلیٰ بھارتی پنجاب مریندر سنگھ کا پاکستان آنے سے انکار بارڈر کھولنے سے ...

  



نئی دہلی (آن لائن،آ ئی این پی) بھارتی پنجاب کے وزیراعلیٰ امریندر سنگھ نے پاکستان کی جانب سے بھیجے گئے کرتار پور بارڈر کی افتتاحی تقریب کے دعوت نامے کا انتہائی تضحیک آمیز انداز میں جواب دیا ہے اور کہا ہے کہ ایل او سی پر روزانہ بھارتی فوجی مارے جا رہے ہیں اس لئے پاکستان نہیں آ سکتا ۔انہوں نے پاکستان دعوت نامے کے جواب میں کہا ہے کہ بھارتی فوجیوں کی ہلاکت کی باعث پاکستان نہیں آ سکتا ایل او سی پر روزانہ بھارتی فوجی مارے جا رہے ہیں۔گورو جی ہمیں امن عطا کریں۔تفصیلات کے مطابق پاکستانی حکومت کی جانب سے فیصلہ کیا گیا ہے کہ وہ 28نومبر کو کرتار پور بارڈر کھولے گا اور اس حوالے سے ایک پرشکوہ تقریب کا اہتمام کیا جائے گا جس میں دونوں ممالک کے اعلی اور حکومتی حکام شرکت کریں گے۔انکا کہنا تھا کہ گردوارا کرتار پورمیں حاضری دینا ہمیشہ سے میرا خواب رہا اور مجھے شاہ محمود قریشی کی جانب سے بھیجا گیا دعوت نامہ ٹھکرانے پر افسوس ہورہا ہے۔انہوں نے امید ظاہر کی کہ پاکستان اس کوریڈور پر تیزی سے تعمیری مراحل مکمل کرلے گا تاکہ بھارتی شہری گردوارا کرتار پور پر اپنی عقیدت کا اظہار کرنے کیلئے جلد از جلد وہاں جا سکیں۔

امریندر سنگھ

اسلام آباد ( آن لائن ) ترجمان دفترخارجہ کا کہنا ہے کہ کرتار پور بارڈر کھولنے سے دونوں ممالک کے مابین باہمی تعلقات بہتر ہونے کی تواقع ہے ۔ سکھوں کیلئے بارڈر کھولنے سے یہ بات عیاں ہوتی ہے کہ پاکستان اقلیتوں کو کتنی اہمیت دیتا ہے ۔ سوشل میڈیا کی ویب سائٹ ٹویٹر پر جاری ایک پیغام میں ترجمان دفترخارجہ ڈاکٹر محمد فیصل نے کا کہنا ہے کہ 28نومبر کو وزیر اعظم عمران خان کرتار پور بارڈر کا سنگ بنیاد رکھیں گے۔ جس سے یہ بات واضع ہوتی ہے کہ پاکستان میں اقلیتوں کو اہمیت دی جاتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان ہمسایہ ممالک کے ساتھ بہتر تعلقات کا خواہاں ہے تاہم اگر بھارت پاکستان کے ساتھ مذاکرات کا مثبت جواب دے تو دونوں ممالک کے مابین تعلقات خوشگوار ہوسکتے ہیں۔

دفتر خارجہ

مزید : صفحہ اول


loading...