آزادی مارچ سے عمرانی حکومت کے وزراء دماغی توازن کھو بیٹھے،دینی مدارس کے طرف بڑھنے والے ہاتھ کاٹ دینگے:قاری محمدعثمان

 آزادی مارچ سے عمرانی حکومت کے وزراء دماغی توازن کھو بیٹھے،دینی مدارس کے طرف ...
 آزادی مارچ سے عمرانی حکومت کے وزراء دماغی توازن کھو بیٹھے،دینی مدارس کے طرف بڑھنے والے ہاتھ کاٹ دینگے:قاری محمدعثمان

  



کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)جمعیت علمائے اسلام ف کے رہنما قاری محمد عثمان نے کہاکہ 29 نومبر کو اہل کراچی نااہل عمرانی حکومت کے خلاف اپنی نفرت کا اظہار کریں گے، آزادی مارچ سے عمرانی حکومت کے وزراء دماغی توازن کھو بیٹھے ہیں،دینی مدارس کے طرف بڑھنے والے ہاتھ کاٹ دئے جائیں گے،مدارس کو لاوارث سمجھنے والے وزراء اب اپنے انجام کا انتظار کریں،جعلی اور ناجائز حکومت سے عوام کو جلد چھٹکارا حاصل ہوگا۔

تفصیلات کے  مطابق جے یو آئی سندھ  کے رہنما قاری محمد عثمان نے علمائے کرام سے اپیل کی کہ وہ طلباء اور اپنے متعلقین کو جمعہ 29 نومبر والے مظاہرے میں بھرپور شرکت کی تلقین کریں تاکہ عمرانی حکومت کی نحوست سے ملک اور قوم کو جلد نجات مل سکے،عمرانی حکومت اِس وقت ملک کو تاریخ کی بدترین مہنگائی، بے  روزگاری،معیشت کی تباہ حالی میں ڈبونے کے ساتھ ساتھ شعائر اسلام کو نقصان پہنچانے کی مذموم کوشش کررہی ہے،کچھ وزراء دینی مدارس کے خاتمے اور کچھ ٹماٹر کی جگہ دہی کے استعمال کی تلقین کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مدراس دینیہ کے خلاف پروپیگنڈے اور زہر افشانی حکومت کی بیرونی ڈکٹیشن کا واضح ثبوت ہے،قوم کو گمراہ نہ کیا جائے،مدارس معاشرے کی تعمیر و ترقی میں ہراول دستے کا کردار ادا کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ 29 نومبر کو الیکشن کمیشن دفتر کراچی کے سامنے تاریخ ساز احتجاجی جلسہ ہوگا، جس سے جمعیت علماء اسلام کے مرکزی امیر قائد جمعیت مولانا فضل الرحمن خصوصی خطاب کریں گے۔ عوام الناس بھرپور انداز میں شرکت کرکے نااہل اور سلیکٹڈ حکومت کے خاتمے کی تحریک میں شامل ہوں۔ انہوں نے کہا کہ اب وقت آگیا ہے کہ گرتی ہوئی دیواروں کو آخری دھکا دینے کیلئے آزادی مارچ کے پلان بی کے آخری مرحلے میں ایسی قوت کا مظاہرہ کیا جائے کہ پلان سی کی طرف جانے کی ضرورت ہی نہ رہے۔ انہوں نے کہا کہ عمرانی حکومت اب آکسیجن پر چل رہی ہے، بہت جلد قوم اس جعلی حکومت سے چھٹکارا حاصل کرے گی۔

مزید : علاقائی /سندھ /کراچی