وزیراعظم کے پاس ملک چلانے کیلئے مناسب ٹیم نہیں، نواب سرفراز سیال

    وزیراعظم کے پاس ملک چلانے کیلئے مناسب ٹیم نہیں، نواب سرفراز سیال

  



لاہور (سٹاف رپورٹر) ممتاز سماجی و سیاسی شخصیت نواب سرفراز سیال نے کہا ہے کہ کسی شخص کو بھی چیف جسٹس پاکستان مسٹر جسٹس آصف سعید کھوسہ کی بات پر سیخ پا نہیں ہونا چاہئے کیونکہ انہوں نے فہم و فراست کی بنیاد پر جن مسائل کی نشاندہی کی ہے وہ وقت کی ضرورت اور قوم کی امیدوں کے عین مطابق ہے، ضرورت اس امر کی ہے کہ عدلیہ، فوج اور حکومت بھی موجودہ حالات میں ایک پیج پر ہیں، عدلیہ و فوج پہلے ہی ہم آہنگ ہیں حکومت بھی رواداری کا ثبوت دیتے ہوئے ان کی آواز میں اپنی آواز ملائے۔ ”پاکستان“ سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ عدالت عظمیٰ کے چیف جسٹس کا آئی جی پنجاب کے دفتر میں جاکر پولیس اصلاحات کا اعلان کرنا خوش آئند اقدام ہے، اسلام آباد کے نادان وزراء وقت کی نزاکت کو سوچیں اور سمجھیں، محض تنقیدیا بیان بازی ملک و قوم کے مفاد میں ہے نہ ہی ان کے فائدے میں۔ نواب سرفراز سیال کا کہنا تھا کہ وزیراعظم وفاق میں اپنا صرف ایک ترجمان رکھیں، اسی طرح صوبے میں بھی ایک ایک حکومتی ترجمان ہونا چاہئے، ترجمانوں کی فوج ظفر موج ابہام پیدا کرنے کا باعث بن رہی ہے۔ اس امر میں کوئی شبہ نہیں کہ وزیراعظم عمران خان ایک خوددار شخص ہیں لیکن ان کے پاس وفاق یا پنجاب چلانے کے لئے قابل اور مناسب ٹیم کا فقدان ہے۔ نظام سیاست چلانے کیلئے تحریک انصاف ڈیڈ ہوتی جارہی ہے، صوبے میں وزیراعلیٰ یا وزراء تبدیل کرنا کوئی بڑی بات نہیں، انتظامی امور چلانے کیلئے اس قسم کی اکھاڑ پچھاڑ معمول کی کارروائی ہے، اگر یہ محسوس ہو رہا ہے کہ عثمان بزدار سے کام نہیں چل رہا تو اس پر ایکشن لینے سے قیامت نہیں آئے گی۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب میں بیوروکریسی بیلنس ہے اور خوش اسلوبی سے کام کر رہی ہے، اسے حکومتی نااہلیوں کا ذمہ دار ٹھہرانا مناسب نہیں۔ جہاں تک سابق وزیراعظم میاں نوازشریف کی بیرون ملک روانگی کا تعلق ہے تو ان کے جانے کے بعد جو خبریں گردش کر رہی ہیں اور جو بیانات سامنے آرہے ہیں یہ کوئی مناسب طریقہ نہیں، ہمیں گفتگو میں اعتدال کا دامن ہاتھ سے نہیں چھوڑنا چاہئے۔

نواب سرفراز سیال

مزید : صفحہ آخر