نواز شریف کا ایک اور طبی معائنہ، ڈاکٹرز کی ہسپتال داخل ہونے کی تجویز

    نواز شریف کا ایک اور طبی معائنہ، ڈاکٹرز کی ہسپتال داخل ہونے کی تجویز

  



لندن(مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں)سابق وزیر اعظم نواز شریف کا لندن برج ہسپتال میں، یونیورسٹی ہسپتال کے ماہر امراض قلب ڈاکٹرلارنس نے طبی معائنہ کیا، جبکہ نواز شریف کے معالج ڈاکٹر عدنان نے کہا ڈاکٹروں نے انہیں ہسپتال میں داخل ہونے کی ہدایت کی ہے، ان کا (پی ای ٹی سکین) جمعرات کو ہوگا،جسکے بعد مزید علاج کا فیصلہ ہوگا، پیر کو نوازشریف دل کا معائنہ کرانے کیلئے لندن برج ہسپتال پہنچے تو ان کے ہمراہ ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان،بھائی شہباز شریف، بیٹاحسین نواز، وقار احمد، محمد حنیف اور ناصر بٹ  و دیگر لوگ تھے،معائنے کے بعد نوازشریف ہسپتال سے واپس گھر روانہ ہوگئے۔ اس موقع پر شہباز شریف کا میڈیا سے گفتگومیں کہنا تھا ڈاکٹرزہیماٹورلوجسٹ کی رپورٹس کا انتظار کر رہے ہیں اس کے بعد کوئی فیصلہ کیا جائے گا۔دیار غیر میں سیاسی باتیں نہیں کرنا چاہتا، میں نے کبھی شیخ رشید کی بات کا جواب نہیں دیا۔ اللہ تعالیٰ شیخ رشید کو ہدایت دے۔واضح رہے پریس کانفرنس میں شیخ رشید نے کہا تھا میڈیا پر تاثر دیا گیا نواز شریف آج مرا یا صبح، میڈیا کو بیوقوف بنانے پر ڈاکٹر عدنان اور ڈاکٹر وقار سے تفتیش ہونی چاہیے۔واضح رہے نوازشریف لندن میں علاج کی غرض سے 19نومبر سے موجود ہیں،اس دوران وہ 3 بار طبی معائنے کیلئے گھرسے باہرنکلے۔دو روز قبل لندن کے یونیورسٹی ہسپتال میں دل کے ماہر معالج ڈاکٹرلارنس نے انکا طبی معائنہ کیا تھا،اس حوالے سے نواز شریف کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان کا کہنا تھا سابق وزیراعظم نے ڈاکٹر لارنس سے یونیورسٹی کالج ہسپتال (ہارٹ ہسپتال) میں دل کا معائنہ کرایا، ان کو دل سے متعلق ٹیسٹ اور علاج کا روڈمیپ دیا گیا ہے۔ ڈاکٹر لارنس گائز ہسپتال کے ہیماٹولجسٹس کی معاونت سے نواز شریف کا علاج کریں گے۔

نواز شریف معائنہ 

مزید : صفحہ اول